Pakistan Affairs

 

National Geographic magazine subscription


Subscribe to the Bloomberg Businessweek magazine

 

ڈالڈا

Dalada ka Dasterkhuan Home Delivery world wide

 

 

 

 

 

 


Subscribe to the Economist magazine

 

 

سعودی عرب کے لاپتہ شہزادے

 

 

 

 

 


 


 


 

اطلاعات کے مطابق سعودی عرب کے شاہی خاندان میں اختلاف گہرے ہوتے جا رہے ہیں۔موجودہ سعودی فرما روا شاہ سلمان کے اقتدار سنبھالنے کے بعد سے یہ اختلافات غیر معمولی طور پر نمایاں ہو کر سامنے آ رہے ہیں۔

بی بی سی کی ایک رپورٹ کے مطابق گزشتہ دوبرسوں میں یورپ میں رہائش پذیر تین سعودی شہزادے لاپتا ہوگئے ہیں۔ لاپتہ ہونے والے شہزادوں میں سعود بن النصر اور سلطان بن ترکی بن عبدلعزیز شامل ہیں۔ بی بی سی کے مطابق شاہی خاندان کے تینوں افراد نہ صرف یہ کہ یورپ کے مختلف علاقوں سے اغوا کئے گئے بلکہ اس بات کے واضح شواہد ہیں کہ ان لاپتہ افراد کو بعد ازاں سعودی عرب لے جایا گیا۔

بی بی سی کی رپورٹ میں یہ بھی بتایا گیا کہ لاپتہ ہونے والے افراد موجودہ سعودی حکمرانوں پر عموما تقید کیا کرتے تھے۔ اس سے بیشتر سعودی حکومت کی جانب  سے ان افراد کے شکوے دور کرنے کے لئے جو بات چیت ہوئی اسکی ریکارڈنگ محفوظ کیے جانے کی اطلاعات بھی ہیں۔ شاہی خاندان کے ایک اور فرد شہزادہ خالد اس وقت جرمنی میں جلاوطنی کی زندگی گزار رہے ہیں۔انہوں نے بی بی سی کو بتایا کہ شاہی خاندان کے چار افراد جو سعودی عرب کی موجودہ حکومت کی پالیسیوں پر تنقید کرتے رہے ہیں ان میں سے تین کو اغوا کے بعد سعودی عرب پہنچایا جا چکا ہے۔شہزادہ خالد نے ان خدشات کا اظہار کیا کہ ان کا اپنا انجام بھی ایسا ہی ہوسکتا ہے۔ بی بی سی کہ مطابق سعودی حکومت نے اس خبر کے مندرجات پر تبصرہ کرنے سے گریز کیا۔

"مغوی: سعودی عرب کے لاپتہ شہزادے" کے نام سے عربی زبان میں ایک دستاویزی فلم بی بی سی پر رواں ہفتہ نشر کی جائے گی۔

یاد رہے شاہی خاندان میں ولی عہد کی تبدیلی کا اعلان ہو چکا ہے اور اپنے بیٹے کے حق میں شاہ سلمان کے دستبردار ہونے کی اطلاعات بھی رپورٹ ہو چکی ہیں۔

 

ہمارے مقبول صفحات 

آہ؛  مادام روتھ فاو

ایران کے سابق صدر ہاشمی رفسنجانی

جرمنی میں برقعے پر پابندی

 

Readers Digest in Pakistan

 

کوریا میں احتجاج