آنچلاختصارئےسندھ

تُو کہ ناواقفِ آدابِ غلامی ہے ابھی ۔۔ مسعود قمر

شہنشاہ ایران پاکستان میں تشریف فرما ہیں۔۔ رات کے دو بجے ہیں ۔۔ شہنشاہ نے پاکستان کی ایک اداکارہ کا رقص دیکھنے کی خواہش کا اظہار کیا ۔۔۔ شہنشاہ کے غلاموں کے غلام نے اپنی ایک مونچھ کو دو انگلیوں میں پکڑتے ایک وردی پوش غلام کی طرف دیکھا ، اداکارہ جو دن بھر شوٹنگ کر کے تھکی ہاری گھر آئی ہی تھی ، اس کا صرف اتنا ہی قصور تھا کہ اس نے کہا
ظل الٰہی اگر مجھے صبح ہی بتا دیتے تو میں کہیں جاتی ہی ناں
بس پھر کیا تھا تین جیپوں میں جتنے سما سکتے تھے سب جیپ میں سوار ہو کر اس اداکارہ کے گھر پہنچ گے
اور ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ اور پھر وہ اداکاہ گولیاں کھا کے ہسپتال چلی گی
اِس گلوکارہ کا اتنا ہی قصور تھا کہ اس کے پیٹ میں ایک تخلیق بن رہی تھی اور وہ بیٹھ کر گا رہی تھی
مگر ظل الہٰی کا حکم ہوا
کھڑے ہو کر گاؤ
اور جب اسے کھڑے ہو کر گانے کے لیے کہا تو پیٹ میں ایک تخلیق ہونے کی وجہ سے ( جو شاید انہی میں سے کسی کی ہو) اسے اٹھنے میں دیر ہو گئی
بس پھر کیا تھا
ادکارہ گولیاں کھا کر ہسپتال پہنچ گئی تھی
مگر
یہ گلوکارہ گولیاں کھا کے قبر میں چلی گئی
تو کہ ناواقف آداب غلامی ہے ابھی

فیس بک کمینٹ

متعلقہ تحریریں

Leave a Reply

Your email address will not be published.

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker