اہم خبریںصنعت / تجارت / زراعت

نجی بینک ڈالر کے اتار چڑھاؤ کا باعث بنے : فرانزک آڈٹ کرایا جائے ۔۔ صنعت کاروں کا مطالبہ

ملتان۔:جنوبی پنجاب کے تاجروں اورصنعت کاروںنے ملک کے موجودہ اقتصادی مسائل اورمعیشت پربڑھتے ہوئے دباؤکوکم کرنے کے لئے مطالبہ کیاہے کہ ٹیکنوکریٹس پرمشتمل طویل المدت ٹاسک فورسزقائم کی جائیں جن میں ٹیکنوکریٹس کے علاوہ تاجروں اورصنعت کاروں کے نمائندے بھی شامل ہوں ان ٹاسک فورسز کوپارلیمنٹ کاتحفظ حاصل ہواوروہ ایسے طویل مدت کے معاشی منصوبے متعارف کروائیں جو حکومتوں کی تبدیلی سے متاثرنہ ہوں اوریہ ٹاسک فورسز سیاسی مداخلت سے بھی بالاترہوں ۔
یہ مطالبہ جمعرات کوایوان تجارت وصنعت ملتان میں جنوبی پنجاب کے ایوان ہائے تجارت وصنعت کے مشترکہ اجلاس میں کیاگیا۔اجلاس میں ملتان چیمبرآف کامرس کے علاوہ ڈیرہ غازیخان ،رحیم یارخان ،بہاولپور،ساہیوال ،جھنگ ،وہاڑی ،خانیوال ،لیہ کے ایوان ہائے تجارت وصنعت کے علاوہ ملتان، لیہ،ڈیرہ غازیخان،ساہیوال،بہاولپورکے ویمن چیمبروں، آل پاکستان بیڈشیٹس اینڈ اپ ہولسٹری ،مینوفیکچررزایسوسی ایشن ،پاکستان کاٹن جنرز ایسوسی ایشن ،آل پاکستان آئل ملزایسوسی ایشن ،ملتان چیمبرآف سمال ٹریڈرز ،پاکستان کراپ پروٹیکشن ایسوسی ایشن ،آل پاکستان سالوینٹ ایکسٹریکٹرزایسوسی ایشن ،آل پاکستان فرٹیلائزراینڈڈیلرزایسوسی ایشن کے نمائندوں نے شرکت کی ۔اجلاس میں سیاسی جماعتوں سے مطالبہ کیاگیاکہ وہ باہمی اختلافات کوختم کرکے معیشت کے استحکام کے ایجنڈے پرمتحدہوجائیں،تاجروں اورصنعت کاروںکی جانب سے پاکستان کے ڈیفالٹ ہونے کے حوالے سے پھیلائی گئی خبروں کو بے بنیاد قراردیاگیااورکہاگیاکہ سری لنکاکی مثالیں دینے والوں کو معلوم ہوناچاہیے کہ پاکستان میں دوردورتک سری لنکا جیسی صورتحال کاامکان نہیں ۔
اجلاس کے بعدمشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ایوان تجارت وصنعت ملتان کے صدر خواجہ محمد حسین اور کنوینیئرخواجہ محمد یوسف نے کہاکہ ضرورت اس بات کی ہے کہ ملک میں سیاسی استحکام پیداکیاجائے کیونکہ سیاسی عدم استحکام ہی معاشی عدم استحکام کاباعث بنتاہے ۔خواجہ محمدحسین نے کہاکہ ملک کوڈیفالٹ کاکوئی خطرہ نہیں ،پاکستان کے معاشی مستقبل کے حوالے سے سوشل میڈیاپرمنفی پراپیگنڈہ کیاجارہاہے ۔انہوںنے کہاکہ موجودہ صورتحال میں سٹیٹ بینک کواپناکردار احسن طریقہ سے انجام دیناچاہیے ۔معاشی عدم استحکام میں بعض نجی بینکوںنے فائدہ اٹھایا اورڈالرکے اتارچڑھاؤکاباعث بنے ۔انہوں نے کہاکہ اس صورتحال میں سٹیٹ بینک کی گرفت ان بینکوں پرکمزوردکھائی دی ۔اجلاس میں مطالبہ کیاگیاکہ بینکوں کے لین دین کا فرانزک آڈٹ کیاجائے تاکہ صورتحال کی ذمہ داری کاتعین ہوسکے ۔
چیمبرآف کامرس کے کنوینیئرخواجہ محمد یوسف نے کہاکہ سیاسی جماعتوں کو چارٹرآف اکانومی پراتفاق رائے سے عمل کرناچاہیے ۔اس وقت تاجربرادری کااعتماد بحال کرنے کی ضرورت ہے ۔غیریقینی صورتحال ڈالرکے اتارچڑھاؤ ،پٹرول اوربجلی کی قیمتوں میں اضافے نے بعض لوگوں کو بہت فائدہ پہنچایااوربعض تاجراورصنعت کارنقصان کاشکارہوئے ،انہوںنے کہاکہ آنے والے دنوں میں خوراک اورادویہ کا بحران بھی پیداہوسکتاہے ،ادویہ ساز ادارے سرمایہ کاری سے گریزکررہے ہیں جس کی وجہ سے مارکیٹ میں بعض ادویہ کی قلت بھی پیداہورہی ہے جوآنے والے دنوں میں بڑھ سکتی ہے

فیس بک کمینٹ
Tags

متعلقہ تحریریں

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker