اہم خبریں

سال رواں کا نوبل امن انعام ایتھوپیا کے وزیر اعظم آبے احمد کو مل گیا

اوسلو:2019 کا نوبل امن انعام ایتھوپیا کے وزیر اعظم آبے احمد کو دیا گیا ہے۔ اوسلو مین نوبل کمیٹی کی سربراہ بیرت رائس آندرسن نے تھوڑی دیر پہلے یہ اعلان کیا۔نوبل کمیٹی کی سربراہ نے بتایا کہ آبے احمد کو یہ انعام امن کے لئے عالمی تعاون، ہمسایہ ملک اریٹیریا کے ساتھ سرحدی تنازعہ ختم کرنے، سیایس قیدیوں کو رہا کرنے اور ملک میں آزادی رائے بحال کرنے کے لئے دیا گیا ہے۔ انہوں نے وزارت عظمی سنبھالتے ہی اریٹیریا کے ساتھ سرحدی تنازعہ ختم کرنے کے لئے کام شروع کردیا تھا۔ اریٹیریا کے صدر کے ساتھ مذاکرات کے بعد انہوں نے ایک امن معاہدہ پر بھی رضامندی ظاہر کی۔آبے احمد گزشتہ سال اپریل میں ایتھوپیا کے وزیر اعظم بنے تھے۔ وہ اورومو ڈیموکریٹک پارٹی (او ڈی پی) کے علاوہ ایتھوپین جمہوری فرنٹ ( ای پی آر ڈی ایف) کے بھی سربراہ ہیں۔ اریٹیریا کے ساتھ سرحدہ تنازعہ ختم کرنے کے معاہدہ کے ذریعے انہوں نے اس علاقے میں بیس سال پرانی جنگ کا خاتمہ کیا ہے۔دونوں ملکوں کے درمیان جنگ میں ہزاروں لوگ ہلاک ہوئے تھے۔ اسے افریقہ کے طویل ترین مسلح تصادم کے طور پر بھی یاد کیا جاتا ہے۔ اس کے علاوہ آبے احمد نے اپنے ملک میں متعدد دوررس سیاسی اصلاحات کا آغاز کیا ہے۔نوبل امن انعام کا اعلان ہونے سے پہلے آبے احمد کا نام چند پسندیدہ امید واروں میں شامل تھا تاہم ماحولیات کے لئے کام کرنے والی سویڈن کی نوجوان طالبہ گریتھے تھون برگ کا نام سر فہرست تھا۔ قیاس کیا جارہا تھا کہ اس سال کا امن انعام انہیں دیا جائے گا اور اس طرح وہ امن انعام لینے والی کم عمر ترین شخصیت بن جائیں گی۔ 2019 کے امن انعام کے لئے نوبل کمیٹی کو 301 امیدواروں کے نام موصول ہوئے تھے۔ ان میں 223 افراد اور 78 تنظیمیں تھیں۔امن انعام جیتنے والے ایتھوپیا کے وزیر اعظم آبے احمد 15 اگست 1976 کو پیدا ہوئے۔ انہوں نے سیاسی طور پر سرگرم ہونے کے بعد سے آزادی رائے اور امن کے لئے کام کیا ہے۔ اریٹیریا کے ساتھ امن قائم کرنے کے عالوہ وہ مشرقی اور شمالی افریقہ کے تنازعات کو حل کروانے میں بھی سرگرم رہے ہیں۔سیاست میں سرگرم ہونے سے پہلے آبے احمد فوج کی خفیہ ایجنسی میں آفیسر کے طور پر کام کرتے رہے تھے۔
(بشکریہ: کاروان۔۔۔ناروے)

فیس بک کمینٹ

متعلقہ تحریریں

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker