اہم خبریں

نواز شریف 48 گھنٹے میں رپورٹ دیں ورنہ ایکشن ہو گا: یاسمین راشد

لاہور : پنجاب کی وزیرِ صحت ڈاکٹر یاسمین راشد نے کہا ہے کہ اگر 48 گھنٹوں میں میاں نواز شریف کی صحت سے متعلق تازہ ترین رپورٹیں جمع نہیں کروائی گئیں تو محکمہ داخلہ ان کے خلاف ایکشن لے گا۔میاں محمد نواز شریف کے ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان نے ڈاکٹر یاسمین راشد کی پریس کانفرنس کے فوری بعد اپنے ٹویٹر اکاونٹ سے میاں نواز شریف کی تازہ ترین میڈیکل رپورٹیں جاری کی ہیں جس پر ان کے لندن کے معالج کے دستخط موجود ہیں۔
لیکن پریس کانفرنس کے دوران ڈاکٹر یاسمین راشد نے یہ موقف اختیار کیا کہ حکومت کو برطانوی ہائی کمیشن سے تصدیق شدہ رپورٹیں درکار ہیں۔
پیر کو سوشل میڈیا پر سابق وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف کی ایک تصویر شئیر کی گئی جس میں انہیں اپنے خاندان کے ساتھ لندن کے ایک ریسٹورنٹ میں دیکھا گیا۔ یہ تصویر وفاقی وزیر فواد چوہدری کی جانب سے بھی ان کے ٹوئٹر اکاونٹ پر شئیر کی گئی۔
جس کے بعد یہ خبریں بھی سامنے آئیں کہ وزیر اعظم عمران خان نے ڈاکٹر یاسمین راشد سے ٹیلی فون پر رابطہ کیا اور انہیں میاں محمد نواز شریف کی میڈیکل رپورٹیں منگوا کر عوام کے سامنے رکھنے کی ہدایات بھی جاری کیں۔
صوبۂ پنجاب کی وزیرِ صحت ڈاکٹر یاسمین راشد نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ وزیر اعظم عمران خان کو میاں نواز شریف کی تصویر دیکھ کر اتنی ہی تکلیف ہو رہی ہو گی جتنی ایک پاکستانی کو ہو رہی ہے۔
منگل کو لاہور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انھوں نے کہا ‘ نوازشریف کی تصویر سوشل میڈیا پر دیکھی ہے جس پر سب کو تحفظات ہیں۔ نوازشریف چھ ہفتوں کی اجازت لے کر گئے تھے۔ انھوں نے سوال کیا ‘اب آپ ہمیں بتائیں کہ علاج کروا کر آپ واپس کب آئیں گے۔’
انہوں نے مزید بتایا کہ خواجہ حارث نے نواز شریف کی پہلی رپورٹ 27 دسمبر کو بھیجی جبکہ پچیس دسمبر کو ان کی ضمانت کا وقت ختم ہو گیا تھا۔ جس کے بعد ہم نے میڈیکل بورڈ کے ممبران کی میٹنگ بلائی تا کہ وہ ان کی رپورٹیں دیکھیں اور ہمیں بتائیں کہ ضمانت میں توسیع کی کی ضرورت ہے یا نہیں۔

فیس بک کمینٹ
Tags

متعلقہ تحریریں

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker