اہم خبریں

ناسا نے دس سال بعد دوبا رہ خلائی مشن بھیج دیا

واشنگٹن : راکٹ کمپنی سپیس ایکس کی جانب سے ناسا خلابازوں ڈگ ہرلی اور باب بیہنکن کو خلا میں بھیج دیا گیا ہے۔ اس سے قبل بدھ کو خراب موسم کی وجہ سے یہ سفر ملتوی کر دیا گیا تھا۔دونوں خلا بازوں کو مدار میں لے جانے کے لیے پاکستان کے مقامی وقت کے مطابق رات 12:22 منٹ کا وقت طے کیا گیا تھا۔ان لمحات کو ٹی وی سکرینز اور سوشل میڈیا پر لائیو دیکھا گیا۔
سپیس ایکس ٹیم نے وقتِ رخصت خلا بازوں کے کام کے لیے ان کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ وہ اپنے خوبصورت سیارے کے نظاروں سے محظوظ ہوں۔یہ پہلی نجی خلائی گاڑی ہے جو خلا بازوں کو مدار میں لے کر جا رہی ہے۔یہ اپنے ابتدائی مدار میں تقریباً نو منٹ میں جائیں گے اور راکٹ کا ایک حصہ نو منٹ میں زمین پر لوٹا جسے دوبارہ استعمال کیا جائے گا۔
ناسا کی جانب سے بتایا گیا کہ راکٹ کا پہلا حصہ نیچے آ گیا ہے۔یہ فالکن نائن راکٹ کی پہلی واپسی ہے جس میں وہ خلا میں انسانوں کو لے کر گیا ہے۔گرینیج کے معیاری وقت کے مطابق خلا باز اتوار کو سہ پہر ساڑھے تین بجے خلائی سٹیشن میں پہنچ جائیں گے۔یہ مشن اس لیے بھی بہت اہم ہے کیونکہ سنہ 2011 کے بعد یہ پہلا موقع ہے جب امریکہ اپنے خلابازوں کو آئی ایس ایس پر پہنچانے کے قابل ہوا ہے۔
یاد رہے کہ فلوریڈا کے کینیڈی سپیس سینٹر میں خراب موسم کی وجہ سے بدھ کے روز بین الاقوامی خلائی سٹیشن (آئی ایس ایس) کے لیے ان کی پرواز ملتوی کردی گئی تھی۔دونوں خلا باز اب زمین کی کشش ثقل سے نکل چکے ہیں۔ اب وہ انیس گھنٹوں کے بعد انٹرنیشنل سپیس سٹیشن میں پہنچیں گے۔ لیکن ابھی انھوں نے کام کرنا ہے۔یادرہے کہ یہ ابھی ٹیسٹ فلائیٹ ہے اور خلا باز اس پورے سفر میں سسٹم اور ڈریگن کے کنٹرول کو چیک کریں گے۔
تاہم اس مشن کے حوالے سے صارفین کے ذہنوں میں متعدد سوالات موجود ہیں جن کے جوابات ہم اس تحریر میں دینے کی کوشش کر رہے ہیں۔
(بشکریہ: بی بی سی اردو)

فیس بک کمینٹ

متعلقہ تحریریں

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker