اہم خبریں

نامور ماہر آثاریات ،محقق اور سابق ریلوے افسر زبیر شفیع غوری انتقال کرگئے

ملتان :نامور ماہر آثار قدیمہ ،محقق اور شاعر زبیر شفیع غوری بدھ کے روز لاہور میں انتقال کرگئے۔ ان کی عمر 60برس تھی اور وہ عارضہ قلب کا شکارتھے۔زبیر شفیع غوری 4ستمبر1960کو پیدا ہوئے۔ ان کے والد شفیع غوری ایڈیشنل ڈپٹی کمشنرتھے۔انہوں نے لیہ اور دیگرشہروں میں اپنے والد کی تعیناتی کے دوران ابتدائی تعلیم مکمل کی۔
تاریخ، ثقافت اورشاعری پر ان کی متعدد کتب شائع ہوئیں۔ اردو ،فارسی اورسرائیکی زبانوں پر انہیں عبورحاصل تھا۔ان کی کتابوں میں” اچ شریف(ثقافت ،آثارقدیمہ)“، ” مولتان(دوران محاصرہ اور مابعد۔۔تاریخ)“، ” روای کنارے کی ہڑپائی بستیاں“،” نیرنگ ایران اورسوچ سفینہ(شاعری)“شامل ہیں۔اس کے علاوہ سندھ ساگر پران کی انگریزی کی کتاب زیرترتیب تھی۔
زبیر شفیع غوری 15ویں کامن ریلوے گروپ کے افسروں میں شامل تھے۔انہوں نے ملتان،لاہور سمیت مختلف مقامات پر پاکستان ریلویز میں اعلی عہدوں پر کام کیا۔ریلوے کا گولڑہ میوزیم زبیر شفیع غوری کی کاوشوں سےمکمل ہوا۔

فیس بک کمینٹ

متعلقہ تحریریں

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker