2018 انتخاباتاہم خبریںسرائیکی وسیب

عثمان بزدار وزیر اعلیٰ پنجاب :قیدیوں کو تخت لاہور مبارک ہو

لاہور: پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے عثمان احمد بزدار پنجاب کے نئے وزیرِاعلیٰ منتخب ہوگئے۔نومنتخب اسپیکر صوبائی اسمبلی چوہدری پرویز الٰہی کی سربراہی میں اجلاس منعقد ہوا جس میں ڈویژن کے ذریعے وزیرِاعلیٰ کا انتخاب کیا گیا۔اسپیکر صوبائی اسمبلی چوہدری پرویز الٰہی نے پی ٹی آئی کے عثمان بزدار کے حامیوں کو دائیں جانب کی لابی میں جانے کی ہدایت کی جبکہ مسلم لیگ (ن) کے امیدوار حمزہ شہباز کے حامیوں کو بائیں جانب لابی میں جانے کی ہدایت کی۔اس طرح عثمان بزدار کے حق میں دائیں جانب کی لابی میں جانے والے اراکین کی تعداد 186 جبکہ حمزہ شہباز کے حق میں 159 اراکین بائیں جانب کی لابی میں گئے۔اسپیکر پنجاب اسمبلی نے اعلان کرتے ہوئے کہا کہ 186 ووٹ حاصل کرکے عثمان بزدار صوبے کے نئے وزیرِاعلیٰ منتخب ہوگئے ہیں۔اجلاس کے دوران اپوزیشن اراکین کی جانب سے اجلاس کی کارروائی کے دوران احتجاج بھی کیا گیا۔پنجاب اسمبلی میں تحریک انصاف کی جانب سے عثمان بزدار کو وزارتِ اعلیٰ کے لیے نامزد کیا گیا ہے جبکہ متحدہ اپوزیشن کی جانب سے حمزہ شہباز کو وزارتِ اعلیٰ کا امیدوار نامزد کیا گیا تھا۔اپنے انتخاب کے بعد اسمبلی میں خطاب کرتے ہوئے وزیرِاعلیٰ پنجاب عثمان احمد بزدار کا کہنا تھا کہ میں اس منصب پر فائز ہونے پر اللہ کا شکر ادا کرتا ہوں۔انہوں نے چیئرمین پی ٹی آئی کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ عمران خان نے پنجاب کے سب سے پسماندہ علاقے کو وزارتِ اعلیٰ کے لیے منتخب کیا ہے۔اپنے عزم کا اظہار کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ وہ صوبے میں اسٹیٹس کو کو شکست دیں گے اور یہاں سے کرپشن کا مکمل طور پر خاتمہ کریں گے۔عثمان بزدار نے کہا کہ وہ پنجاب کی پولیس کو عمران خان کے وژن کے ساتھ ٹھیک کریں گے جیسا کہ محنت کے ساتھ خیبرپختونخوا پولیس کو بہتر بنایا گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ ’جب مجھ سے سوال کیا جاتا تھا کہ آپ وزارتِ اعلیٰ کے امیدوار کس میرٹ سے ہیں تو میرا جواب یہ ہوتا تھا کہ میں پنجاب کے سب سے پسماندہ تحصیل سے ہوں اور یہی میرا میرٹ ہے‘۔نومنتخب وزیرِ اعلیٰ نے کہا کہ وہ پورے ایوان کو ساتھ لے کر چلیں گے اور ہر رکنِ اسمبلی ہی اپنے حلقے کا وزیرِ اعلیٰ ہوگا۔خیال رہے کہ پنجاب میں پی ٹی آئی کی 175 اور اس کی اتحادی جماعت مسلم لیگ (ق) کی 10 نشستیں ہیں جو مجموعی طور پر 185 بنتی ہیں۔

فیس بک کمینٹ

متعلقہ تحریریں

Leave a Reply

Your email address will not be published.

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker