کھیل

سب سے کم عمر پاکستانی کوہ پیما شہروز کاشف نے کوہ ہمالیہ سر کرلیا

11 سال کے جس بچے نے ’مکڑا پیک‘ کی جانب جاتے ٹریکرز کو دیکھ کر اپنے والد سے اُن کے ساتھ اوپر جانے کی ضد کی تھی۔ اور 13 سالہ وہ بچہ جسے شمشال میں ’منگلک سر‘ سر کرنے والے مہم جو ’بہت چھوٹا‘ سمجھ کر ساتھ لے جانے پر تیار نہ تھے۔۔۔ آج اس نوجوان نے 19 سال کی عمر میں دنیا کی بلند ترین چوٹی ماؤنٹ ایورسٹ کو سر کر لیا ہے۔
ماؤنٹ ایورسٹ سر کرنے والے سب سے کم عمر پاکستانی کوہ پیما ہونے کےساتھ ساتھ شہروز دنیا کی بلند ترین چوٹی سر کرنے والے پانچویں پاکستانی بن گئے ہیں۔
شہروز کے والد کاشف سلمان اور ان کے مینیجر ظہیر چوہدری نے بی بی سی کو تصدیق کی ہے کہ شہروز نے پاکستانی وقت کے مطابق آج صبح پانچ بجے ایورسٹ کو سر کر لیا ہے۔
شہروز، سیون سوٹ ٹریکس (ایس ایس ٹی ) کی ٹیم کا حصہ تھے۔ ایس ایس ٹی کے بانی چھنگ داوا شرپا نے بھی شہروز کو مبارکباد دیتے ہوئے تصدیق کی ہے کہ انھوں نے آج صبح ہماری ٹیم کے ساتھ ایورسٹ کو سر کر لیا ہے۔
نیپال میں واقع ماؤنٹ ایورسٹ 8848 میٹر بلند ہے اور آٹھ ہزار میٹر سے بلند چوٹیوں میں نہ صرف بلند ترین ہے بلکہ اس کا ڈیتھ زون بھی سب سے بڑا ہے۔
یاد رہے سب سے کم عمری میں ایورسٹ سر کرنے کا اعزاز اس وقت امریکہ کے جارڈن رومیرو کے پاس ہے جنھوں نے سنہ 2010 میں 13 سال اور تقریباً 10 ماہ کی عمر میں ایورسٹ کو سر کیا تھا۔
جارڈن رومیرو کے علاوہ انڈیا کی ملاوتھ پُرنا نے 13 سال 11 ماہ کی عمر میں اور نیپال کے تیمبا تشیری نے 16 سال کی عمر میں ایورسٹ کو سر کر رکھا ہے۔ یعنی شہروز وہ چوتھے کوہ پیما ہیں جنھوں نے کم عمری میں ایورسٹ کو سر کیا ہے۔
(بشکریہ:بی بی سی اردو)

فیس بک کمینٹ
Tags

متعلقہ تحریریں

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker