عمران عثمانیکھیللکھاری

مشہور زمانہ بال ٹیمپرنگ ٹیسٹ کے تھرڈ امپائر نئے انکشافات کے ساتھ منظر عام پر ۔۔عمران عثمانی

جنوبی افریقہ آسٹریلیا بال ٹیمپرنگ اسکینڈل کے 2 سال بعد اس وقت کے میچ کے تھرڈ امپائر این گولڈ نے انکشاف کیا ہے کہ اسکو پکڑنے کے لئے پوچھ گچھ کا آغاز انہوں نے کیا تھا. سابق کرکٹ امپائر نے اپنی کتاب بھی لانچ کردی ہے جس کا نام مائی لائف ان کرکٹ رکھا ہے.
62 سال امپائر کہتے ہیں کہ کیپ ٹائون ٹیسٹ میں واقعہ سے قبل انہوں نے گیند کا کلر تبدیل دیکھا تو میں نے انکوائری ایک ایسے سوال سے کی کہ کوئی اس پر یقین نہیں کر رہا تھا میں نے آسٹریلوی آف اسپنر سے پوچھا کہ تم نے کس رنگ کی جرابیں پہن رکھی ہیں.
وہ حیران رہ گئے اور جانے لگے تو میں نے پھر پکارا .وہ گئے اور سفید جرابیں لےآئے.
میرا خیال تھا کہ وہ بلیک کلر کی ہونگی لیکن وہ سفید ہی تھیں.مجھے جرابوں کے کلر کی تلاش تھی کیونکہ گیند کا رنگ ایسا ہوگیا جو حیران کن تھا. فیلڈ امپائرز اسٹیون اسمتھ، ڈیوڈ وارنر اور کیمرون بین کرافٹ سے بات کر رہے تھے .
ایک دن کا کھیل جب ختم ہوا تو کوئی سوچ نہیں سکتا تھا کہ اس پر ریگ مار رگڑا گیا. .وہ حقیقی شائننگ کی کوشش کی طرح تھا لیکن وہ گیند اب بھی موجود ہے اسے کوئی بھی دیکھے سوچ بھی نہیں سکتا کہ اسکے ساتھ کیا ہوا .
بال کے رنگ کی تبدیلی کا معمہ کیپ ٹائون کے تیسرے ٹیسٹ کے تیسرے روز اس وقت مکمل کھلا جب ٹی وی فوٹیج نے کیمرون بین کرافٹ کو ریگ مار سے گیند کی سائیڈ رگڑتے پکڑ لیا.
سابق امپائر کہتے کہ میں حیران رہ گیا کہ کرکٹرز نے کیا حرکت کردی. ملکی سطح پر رسوائی کرکٹرز کی معطلی سے بڑی سزا رہی .یہ معمہ اب بھی موجود ہے کہ کپتان سمیت ٹیم نے کیوں یہ سب کیا .
واقعہ 2 سال قبل مارچ کے آخری ہفتہ میں پیش آیا تھا.
آئی سی سی نے اس پر 3 کرکٹرزکو سزا دی تھی تو کرکٹ آسٹریلیا نے 9 ما ە سے ایک سال کی پابندی عائد کردی تھی

فیس بک کمینٹ
Tags

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker