اہم خبریں

اے پی پی کے ملازمین برطرف: سنتھیارچی بھاری معاوضے پر پی ٹی وی پر پروگرام پیش کریں گی

اسلام آباد : منگل کے روز وزارت اطلاعات ونشریات کے تحت کام کرنے والے سرکاری خبررساں ادارے اے پی پی سے پیپلزپارٹی دور میں بھرتی کیے گئے ملازمین کی برطرفی کے احکامات جاری کردیئے گئے جبکہ دوسری جانب حکومت نے بھاری معاوضے پر امریکی شہری سنتھیا رچی کی خدمات پاکستان ٹیلی ویژن کے لیے حاصل کرلی ہیں۔ پی ٹی وی ورلڈ کی جانب سے ٹوئٹر پر اعلان کیاگیا ہے کہ سنتھیارچی جلد ہی پی ٹی وی ورلڈ پر پروگرام پیش کریں گی۔ اس اعلان میں سنتھیارچی کو معروف لکھاری اور فلسماز کہا گیا ہے۔
سنتھیارچی ایک متنازع امریکی شہری کی حیثیت سے جانی جاتی ہیں۔ وہ اس سے پہلے آصف علی زرداری ،رحمان ملک، یوسف رضاگیلانی پر کئی الزامات عائد کرچکی ہیں۔ گزشتہ ہفتے وہ اپنے فلیٹ میں بے ہوش بھی پائی گئی تھیں۔
سماء نیوز کے مطابق پاکستان ٹیلی ویژن نے گزشتہ روزامریکی بلاگرسنتھیا رچی کے پروگرام شروع کرنے سے متعلق ٹویٹ ڈیلیٹ کردی ہے۔گزشتہ روز پی ٹی نیوزکے آفیشل ٹوئٹر اکاونٹ سے بتایا گیا تھا کہ سنتھیارچی سرکاری ٹی وی نیٹ ورک میں شامل ہوچکی ہیں اور مستقبل قریب میں پی ٹی ورلڈ (انگریزی چینل )سے پروگرام کا آغاز کریں گی۔
ٹوئٹرپریہ خبرتیزی سے پھیلی اور خود سنتھیارچی نے بھی اسے اپنے لیے ایک اعزاز قرار دیتے ہوئے ٹویٹ کی تاہم پی ٹی وی کی جانب سے نامعلوم وجوہات کی بناء پر یہ ٹویٹ کچھ دیر بعد ڈیلیٹ کردی گئی۔پنجاب اسمبلی میں پاکستان مسلم لیگ ن کی ایم این اے حنا پرویز بٹ کو شاید علم نہیں تھا کہ سرکاری ٹی وی نے یہ خبر دینے کے ساتھ ہی واپس بھی لے لی ہے ، انہوں نے اپنی ٹویٹ میں لکھا ‘ ایک اور بےروزگار کونوکری مل گئی’۔
سماء ڈیجیٹل نے اس حوالے سے جاننے کیلئے پی ٹی وی کے اندرونی ذرائع سے بات کی جن کا کہنا تھا کہ سنتھیا کے ساتھ معاملات طے پا چکے ہیں اوروہ کچھ عرصے بعد پی ٹی وی ورلڈ کیلئے ہفتہ کے اختتام پرمیگزین شوکیا کریں گی جس کا سیاست سے کوئی لینا دینا نہیں۔ذرائع نے بتایا کہ سنتھیا کے حوالے سے ٹویٹ ‘جلد بازی’ میں کیے جانے کے باعث حذف کی گئی کیونکہ فی الحال کچھ تکنیکی معاملات پر کام کرنا باقی ہے، تاحال یہ فیصلہ بھی نہیں کیا گیا کہ سنتھیا ہفتے میں ایک شو کریں گی یا دو۔
یہ خبر سامنے آنے کے بعد صارفین میں سے بیشتر نے نئی ملازمت کی مبارکباد کے ساتھ ساتھ امریکی بلاگر کے طویل عرصے سے پاکستان میں قیام اور ماضی میں ان کے حوالے سے چند تنازعات کے تناظرمیں سوالات اٹھاتے ہوئے ملے جلے ردعمل کااظہار کیا۔
اس سے قبل سنتھیا نے 29 اگست کو ایف ایم 91 پر ریڈیو شوکی میزبانی کے حوالے سے کی جانے والی ٹویٹ کے جواب میں دلچسپی کااظہار کیا تھا۔
چند روز قبل اسلام آباد میں اپنی رہائش گاہ پر بیہوش پائی جانے والی امریکی بلاگر گزشتہ سال اس وقت خبروں کی زینت بنی تھیں جب انہوں نے الزامات عائد کیے تھے کہ 2011 میں پی پی دورِحکومت میں اس وقت کے وزیرِ داخلہ رحمان ملک نے انہیں زیادتی کا نشانہ بنایا اور اس وقت کے وزیرِ اعظم یوسف رضا گیلانی اور کابینہ کے رکن مخدوم شہاب الدین نے جسمانی طور پر ہراساں کیا۔پی پی رہنماوں نے ان الزامات کی تردید کی تھی، بعد ازاں جنوری 2021 میں سنتھیا اوررحمان ملک کے مابین قانونی چپقلش کا ڈراپ سین ہوگیا تھا جب دونوں نے ایک دوسرے کے خلاف دائردرخواستیں واپس لے لی تھیں۔
ثقافت وسیاحت سےمتعلق وی لاگنگ کے علاوہ سنتھیا ٹی وی چینلز پربطورمبصر بھی سامنے آتی رہی ہیں۔ سال 2010 میں پاکستان آنے والی امریکی خاتون بزنس ویزہ پرپاکستان آئیں۔ رپورٹس کے مطابق سنتھیا2 مختلف پاسپورٹس پر 50 مرتبہ سے زائد پاکستان آچکی ہیں۔کچھ میڈیا رپورٹس کا یہ بھی کہنا ہے کہ سنتھیا رچی پاکستان پہلی بار 9 نومبر 2009 کو آئیں تھیں اور صرف 3 دن قیام کے بعد 12 نومبر کو کراچی ہی سے واپس روانہ ہوگئی تھیں۔ ایف آئی اے کے ریکارڈ کے مطابق وہ ویزٹ ویزے پر پاکستان آئیں تھیں۔ ڈیجیٹل کری ایٹر کہلانے والی سنتھیا رچی لکھاری، میڈیا ڈائریکٹر اور پروڈیوسر ہیں ۔

فیس بک کمینٹ
Tags

متعلقہ تحریریں

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker