اختصارئےکاشف رفیقلکھاری

اشاروں کی زبان:چنگی گل / کاشف رفیق

ویسے تو پرائیویٹ چینلز کی بھرمار میں پی ٹی وی کی حیثیت بظاہر ثانوی ہوچکی لیکن سیکھنے والوں کے لیے پی ٹی وی سے اچھا ادارہ کوئی نہیں۔۔قارئین پی ٹی وی پر روزانہ سات بجے خبرنامہ لگتاہے جس میں ایک نیوز کاسڑ خبریں پڑتاہے اورساتھ بیٹھی ہوئی یا بیٹھا ہوا شخص اشاروں کی
زبان میں مخصوص لوگوں کو اُن خبروں سے آگاہ کرتا ہے!زبان اور کان رکھنے والوں کی نظرمیں شاید اس کی اہمیت نہ ہو مگر اُن اشاروں سے جس کو سمجھانا مقصود ہوتا ہے انہیں سمجھ آجاتی ہے۔۔۔کچھ ایسا ہی آجکل سیاسی میدان میں ہورہا ہے!ہر کوئی ٹامک ٹوئیاں مار رہا ہے ن لیگ والوں سے پوچھو تو کہتے ہیں اگلی باری پھر اُن کی ہے۔۔کپتان کہتے ہیں ہماری حکومت بنے گی اور ملک میں خوشحالی آئے گی۔۔۔زرداری تو اپنی باری طے کرکے معاملات سنبھالےہوئے ہیں۔۔اُدھر ایم ایم اے کا خون بھی گرم ہوچکا۔اورتو اور مولانا سمیع الحق بھی اپنا اتحاد
بنانے کے لیے کوشاں ہیں۔۔اے این پی،بزنجو،اچکزئی،نومولود بلوچستانی حکومت بھی اپنےاپنے گھوڑے دوڑا رہے ہیں،،سوال یہ ہے کہ کیا یہ تمام ‘‘سیاسی رنگ باز’’ اپنےنظریے،سوچ،عمل فہم و فراست ،عوامی پذیرائی کےبل بُوتے پر یہ دعوےکررہے ہیں یا ‘‘کسی کے اشاروں’’ پر آواز بلند کیے ہوئے ہیں،،اگر ان کا ماضی ‘‘ٹٹولیں’’تو کوئی کالا کوٹ پہن کر اشاروں پر چلا توکسی نےخارجہ پالیسی میں مداخلت نہ کرنے کی یقین دہانی کروائی،میمو گیٹ کے ماسٹر مائنڈ سے لاتعلقی ظاہرکرکے،اینٹ سے اینٹ بجانے پرمعافی مانگی تبھی توسینٹ میں ڈپٹی چئیرمین شپ ملی اور کبوتروں کوحکومتی جھانسہ دیکرمنڈیر پربھی لایا جارہاہے،،کسی کوصادق اورامین کا سرٹیفیکٹ دیکر لوگوں کو پارٹی میں شامل کروانے کا کھڑکی توڑ شو جاری ہے اور جنوبی پنجاب محاذ والےجوماضی میں‘‘گھڑا گروپ’’کے نام سےجانےگئے تھے وہ بھی تو ‘اشاروں’ کی‘زبان’ کا بیان ہیں اس لیے سادہ لوح لوگوں سے گزارش ہے کہ لفظوں،لہجوںپر دھیان نہ دیں بلکہ اشاروں پر توجہ دیں ۔۔۔کیونکہ سیاسی شعبدے باز بھی اشاروں کی زبان بول رہے ہیں!!

فیس بک کمینٹ

متعلقہ تحریریں

Leave a Reply

Your email address will not be published.

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker