اہم خبریںکھیللکھاری

کورونا :ہوم آف کرکٹ لارڈز233سال بعدمیچ سے محروم ۔۔ عمران عثمانی کی دلچسپ رپورٹ

لندن : برطانیہ کرکٹ کاموجد ہے اور لارڈز کرکٹ گراؤ نڈ ہوم آف کرکٹ ہے،یہ ٹائٹل کسی انسان کا دیا نہیں بلکہ کرکٹ تاریخ کابغیر کسی اختلاف کے اتفاقی فیصلہ ہے لیکن 2020نے ہوم آف کرکٹ کو کرکٹ سے محروم کردیا ہے،ایسا لارڈز کی 233 سالہ تاریخ میں پہلی بار ہوگا کہ جب کسی کلب لیول کا میچ تک یہاں نہ ہوسکے گا ۔
کورونا کی وجہ سے انگلینڈ کا ہوم سیزن ختم ہے،ڈومیسٹک یا کلب لیول کے میچ کا بھی کوئی امکان نہیں ہے ،انٹر نیشنل میچ بھی یہاں نہیں ہوگا،ٹیسٹ میچز اور محدود اوورز کی کرکٹ اولڈ ٹریفورڈ اور ایجز بول میں منتقل کی جارہی ہے جس کا مطلب یہ بھی ہوگا کہ اگر انگلینڈ میں دیگر مقامات پر ٹیسٹ میچز ہوگئے تو 50 سال بعد ایسا موقع بھی ہوگا کہ لارڈز میں ٹیسٹ میچ نہ ہوسکے،آخری مرتبہ 1970 میں یہاں ٹیسٹ میچ نہیں ہوسکا تھا،ایک دلچسپ بات اور بھی ہے کہ جنگوں کے زمانے میں لارڈز میں کلب لیول کی معمولی کرکٹ بھی نہیں رکی لیکن کورونا نےڈومیسٹک یا کلب لیول کی کرکٹ سے بھی لارڈز کو محروم کر دیا ہے۔
کرکٹ محرومی سے لارڈز کو اس سال 30 ملین پائونڈز کا نقصان ہوگا ،300نئی ممبر شپ سے 15ملین پائونڈز کی آمدنی ہوگی لیکن 52 ملین پائونڈز کی لاگت سے تیار ہونے والے اس کے تعمیری کام میں یہ رقم ناکافی ہوگی،لارڈز کو ڈومیسٹک کرکٹ،ٹی 20 بلاسٹ کے ساتھ ساتھ 2 ٹیسٹ اور ایک ون ڈے میچ کی میزبانی سے محرومی کا سامنا ہے۔
تھامس لارڈز نے 1787میں لارڈز کرکٹ گرائونڈ بنایا تھا،اس کے بعد سے ہوم آف کرکٹ میں ہر سال کسی نہ کسی قسم کی کرکٹ ضرور ہوتی رہی ہے۔
( بشکریہ : کرک سین )

فیس بک کمینٹ
Tags

متعلقہ تحریریں

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker