اختصارئےلکھاریناصر محمود لالہ

لالہ ناصر محمودکا اختصاریہ :وطن پر جوانیاں لٹانے والوں کو قوم کو سلام!

افواج پاکستان ، پاک فضائیہ اور بحریہ کے سرخیلوں کو قوم کا سلام۔ایم ۔ایم۔ عالم تیری جرات ، عظمت، لیاقت، ذہانت اور وطن پرستی کو زبردست خراج عقیدت اس لیے پیش کر رہی ہے قوم کہ 1965ءکی جنگ میں نہ صرف بھارت کو منہ کی کھانا پڑی بلکہ آپ نے دشمن کے پانچ جہازوں کا شکار کرکے دنیا میں پاکستان کا نام سر بلند کیا۔
جنگ بظاہر17دن کی تھی لیکن اتحاد،یگانگت،قومی جذبہ سے سرشار پوری قوم ایک تصویر کی شکل بن کر اللہ کے فضل وکرم سے ازلی دشمن اور جذبہ حب الوطنی سے سرشارجری جوانوں نے بھارت کو ناکوں چنے چبوادئیے۔آج بھی افواج پاکستان اور سکیورٹی اداروں نے اپنی جانیں ہتھیلیوں پر رکھی ہوئی ہیں۔قوم کیسے بھول سکتی ہے سرفروشان پاکستان میجر عزیز بھٹی شہید،راشد منہاس شہید سے لیکر 1965ءکی جنگ کے شہ سواروں کو قوم کا دست بستہ سلام جن کی وجہ سے آج ہم پوری دنیا میں آزاد مملکت کی حیثیت سے پہچانے جاتے ہیں۔
زیست آسان کیے جاتے ہیں
اے وطن تیرے سپاہی لڑ کر
سب کوحیران کیے جاتے ہیں
بنام مودی
یہ جو انسان کے دشمن ہیں سبھی
کس کا نقصان کیے جاتے ہیں
مودی حکومت کے ہاتھوں انسانوں کی تذلیل ہی نہیں ہو رہی بلکہ معصوم بچوں،بیٹے بیٹیوں کے جوانو ں کے خون سے ہاتھ رنگے ہوئے نظر آتے ہیں۔ مودی جوان خوبرو چہروں اور بے گناہ جانثاران کشمیر کی لاشوں کا قبرستان بناتا جارہا ہے اور دنیا کے منصف خاموش تماشائی بنے بیٹھے ہیں۔
میں سلام پیش کرتا ہوں قائد اعظم محمد علی جناح کے افکار کو تدبر کو جنہوں نے اپنی بصیرت سے پاکستان بنایاباوجود اس امر کے پاکستان میں بھی ہر شخص نے دواینٹ کی اپنی اپنی دیوار کھڑی کی ہوئی ہے لیکن پاکستان آج بھی قائم ہے اور ہمیشہ قائم رہے گا انشاءاللہ۔قربان جاؤں اپنے ملک کے سکیورٹی اداروں پراور ہماری عشاق افواج پاکستان کے جری جوانوں پرجنہوں نے 1965ءاور 1971ءکی جنگ سے لیکر آج تک ملک کی دفاع کی خاطر شہادتوں کا نہ رکنے والا سلسلہ قائم ودائم رکھا ہوا ہے۔قوم کا سر فخر سے بلندہے کیونکہ ان شہیدوں کی ماؤں کو سلام،والدین کوسلام،بہنوں،بیٹیوںاور بیواؤں کو سلام۔ان شہیدوں کے بچوں کو سلام عقیدت پیش کرتاہوں جنہوں نے ہمیشہ مادروطن کے دفاع کیلئے خود کو پیش کیا بلکہ ہمیشہ تیار کیا ہوا ہے۔اپنی جوانیاں وطن پر لٹانے کیلئے غازیوں کو سلام۔جو شہادت کا جام ہاتھوں میں تھامے اپنے موروثی دشمن بھارت کے عزائم کو خاک میں ملانے کیلئے ہمیشہ کمر بستہ رہتے ہیں۔میرے ڈھول سپاہیو یاد رکھنا آپ کی شہادتیں بارگاہ رسولﷺ میں، سرداران جنت تمہارے استقبال کیلئے موجود ہیں۔ تمہاری شہادتوں کار نگ ایک نہ ایک دن وارثان کربلاؓ جنت کے سرداران کے آگے سرخرو ہونے کی علامت بنے گا۔پوری قوم آپ کی مقروض ہے تاحیات مرتے دم تک۔آپ عظیم لوگ ہیں۔آپ اور آ پ کی نسلیںپاکستان کے حقیقی وارث ہیں۔پاکستان کا پیداہونے والا ہر بچہ آپ کی شہادتوں پر ناز کرتا ہے۔آپ کے وارثوں کے آگے ہماری نسلوں کی آنکھیں جھکی ہوئی ہیں۔

فیس بک کمینٹ
Tags

متعلقہ تحریریں

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker