اہم خبریں

”غلطی ہو گئی “ : ایران نے مسافر طیارہ گرانے کا اعتراف کر لیا

تہران :ایران کی فوج نے اعتراف کر لیا ہے کہ انھوں نے ’غیر ارادی طور پر‘ یوکرین کا مسافر طیارہ مار گرایا تھا۔
ایران کے سرکاری ٹی وی کے مطابق ایک بیان میں ایرانی فوج کا کہنا تھا کہ ’یہ ایک انسانی غلطی کی بنا پر اس وقت ہوا جب طیارے نے ایران کے پاسدارانِ انقلاب سے منسلک حساس مقام کے قریب پرواز کی۔ اس حادثے میں ملوث افراد کا احتساب ہو گا۔‘
یوکرین کی بین الاقوامی فضائی کمپنی کی پرواز پی ایس 752 بدھ کو ایران کے دارالحکومت تہران سے پرواز کے چند ہی منٹ بعد گِر کر تباہ ہو گئی تھی۔ اس حادثے میں طیارے پر سوار مسافروں اور عملے کے اراکین سمیت تمام 176 افراد ہلاک ہو گئے تھے۔
یہ طیارہ تہران سے یوکرین کے دارالحکومت کیئو جا رہا تھا اور پرواز کے محض آٹھ منٹ بعد ہی گر کر تباہ ہو گیا تھا۔ اس کے گرنے کی اطلاعات اسی وقت آئیں تھیں جب ایران جنرل قاسم سلیمانی کی ہلاکت کے بعد جوابی کارروائی میں عراق میں موجود امریکی فوجی اڈوں پر میزائل حملے کر رہا تھا۔
ایران کے وزیر خارجہ جواد ظریف کا سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر کہنا تھا کہ ’یہ ایک افسوس ناک دن ہے۔ افواج کی اندرونی تحقیقات کے مطابق امریکی جنگی جنون کی وجہ سے اس بحران کے موقع پر یہ انسانی غلطی پیش آئی ہے۔ ہم تمام ممالک کے متاثرین اور ان کے خاندانوں سے معذرت خواہ ہیں اور ان سے تعزیت کرتے ہیں۔‘
یاد رہے کہ اس سے قبل کینیڈا، امریکہ اور برطانیہ نے دعوی کیا تھا کہ انھیں متعدد ذرائع سے ملنے والی معلومات سے اشارہ ملتا ہے کہ یہ طیارہ ایران کے زمین سے فضا میں مار کرنے والے میزائل کا نشانہ بنا۔ جبکہ کینیڈا کے وزیر اعظم جسٹن ٹروڈو نے کہا تھا کہ ممکن ہے کہ یہ عمل ’غیرارادی طور پر ہوا‘۔
ایرانی فوج کی جانب سے جاری کردہ بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ یوکرینی طیارے کو غلطی سے ’خطرناک ہدف‘ سمجھ کر میزائل سے نشانہ بنایا گیا تھا۔
بیان میں کہا گیا ہے کہ ’امریکہ کے ساتھ زبردست تناؤ کی وجہ سے ایران کی فوج تیاری کی انتہائی سطح پر تھی۔ ایسی صورتحال میں، انسانی غلطی اور غیر ارادی طور پر فلائیٹ نشانہ بن گئی۔‘
فوج نے مسافر طیارہ مار گرائے جانے پر معافی مانگتے ہوئے کہا ہے کہ وہ اپنے سسٹمز کو جدید بنائیں گے تاکہ مستقبل میں ایسی ’غلطیوں‘ سے بچا جا سکے۔
چند مغربی ممالک کا کہنا تھا کہ ان کے پاس شواہد موجود ہیں کہ ایرانی فضائی حدود میں یوکرین کے طیارے کو حادثہ ایرانی طیارہ شکن میزائل لگنے کے باعث پیش آیا تھا۔
آج کیے گئے اعتراف سے قبل ایران ان دعوؤں کی تردید کرتا رہا ہے۔
ایرانی سوشل میڈیا اکاؤنٹس پر شیئر کی جانے والی ایک ویڈیو میں یوکرین کی بین الاقوامی ایئرلائن کی پرواز پی ایس 752 کو مبینہ میزائل کا نشانہ بنتے ہوئے دیکھایا گیا ہے۔
ان تصاویر میں زوردار دھماکے کے بعد آگ کے شعلے دکھائی دیتے ہیں جس کے بعد طیارہ اڑان بھرتا رہتا ہے اور اپنا رخ واپس تہران کے ہوائی اڈے کی جانب موڑتا ہے اور پھر آگ کے شعلوں کی لپیٹ میں آ کر زمین سے ٹکرا جاتا ہے۔
( بشلریہ : بی بی سی اردو )

فیس بک کمینٹ
Tags

متعلقہ تحریریں

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker