ادبسرائیکی وسیب

کہانی کار اور شاعر نور احمد غازی طویل علالت کے بعد انتقال کر گئے ۔

ملتان : معروف ناول نگار، افسانہ نگار اور شاعر نور احمد غازی طویل علالت کے بعد ہفتہ کے روز ملتان میں انتقال کر گئے۔ ان کی عمر 83 برس تھی ۔ نور احمد غازی 1937 ء میں پیدا ہوئے ۔ وہ طویل عرصہ سے شعر وادب سے منسلک تھے ۔ ان کے ناول آداب عرض ، سلام عرض اور دیگر ڈائجسٹوں میں قسط وار شائع ہوتے رہے ۔
ان کی 20سے زائد کتابیں شائع ہوئیں ۔جن میں ناول ،افسانوں ،شاعری مضامین اور بچوں کی نظموں کے مجموعے بھی شامل ہیں ۔نور احمد غازی کی کتابوں میں ناول،رقص حیات ،درندے ،افسانوں کا مجموعہ ،رات راستے اور جگنو ،مزاحیہ مضامین کا مجموعہ آب وآتش ،شعری مجموعے وفا کو ہم سفر رکھنا ،وفا سے دوستی رکھو ،منظوم آپ بیتی اور دیگر کتابیں شامل ہیں ۔انہیں ہفتے کے روز ملتان میں سپرد خاک کر دیا گیا ۔ملتان کی مختلف ادبی تنظیموں نے ان کی وفات پر گہرے دکھ اور صدمے کا اظہار کیا ہے

فیس بک کمینٹ
Tags

متعلقہ تحریریں

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker