اہم خبریں

#کرنل_کی_بیوی ٹویٹر پر چھا گئی : شوہر بد تمیزی پر رجمنٹ سے نکالے جا چکے ہیں

مانسہرہ : پاکستان میں ٹوئٹر پر ‘کرنل کی بیوی’ کا ہیش ٹیگ بڑے زور و شور سے ٹرینڈ کر رہا ہے اور اس کی وجہ وہ ویڈیو ہے، جو گذشتہ روز سے وائرل ہے۔
اس ویڈیو میں ایک خاتون خود کو کرنل کی بیوی کہتے ہوئے پولیس اہلکاروں سے تلخ کلامی اور بد تمیزی کرتی نظر آتی ہیں۔سکیورٹی ذرائع کے مطابق یہ واقعہ 20 مئی کی شام چار بج کر 45 منٹ پر مانسہرہ میں ہزارہ ایکسپریس وے پر پیش آیا، جہاں مذکورہ خاتون شنکیاری جاتے ہوئے مانسہرہ ٹنل سے گزرنا چاہتی تھیں، تاہم روکے جانے پر انہوں نے پولیس اہلکاروں سے بدتمیزی کی اور خود ہی رکاوٹیں ہٹا دیں۔
موٹروے پر تعینات ایک کانسٹیبل کی جانب سے بنائی گئی اس ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ خاتون گاڑی کے سامنے کھڑے پولیس اہلکار کے لیے کہتی ہیں کہ ‘چڑھا دو اس پر گاڑی’ اور روکے جانے کی متعدد کوششوں کے باوجود تیزی سے گاڑی لے کر چلی جاتی ہیں۔یہ بات بھی سامنے آئی کہ خاتون نے خود کو جن کرنل صاحب کی اہلیہ قرار دیا، ان کے خلاف ستمبر 2018 میں ایبٹ آباد میں ٹریفک پولیس اہلکاروں کے ساتھ بدسلوکی کا الزام ہے جبکہ ان دونوں واقعات میں ایک ہی گاڑی نظر آرہی ہے۔
ویڈیو وائرل ہوتے ہی سوشل میڈیا پر تبصروں کا طوفان امڈ آیا اور لوگوں نے مذکورہ خاتون کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا۔
سیف اللہ تالپور نامی صارف نے لکھا: ‘کچھ لوگوں کے ذہن بچپن میں ہی اپنے والدین کی تربیت کی وجہ سے ایسے ہوجاتے ہیں۔ انہیں لگتا ہے کہ جو کچھ وہ سوچ یا کر رہے ہیں وہی بالکل درست ہے۔ کرنل کی بیوی کی ہی مثال لے لیں۔’
#کرنل_کی_بیوی
حسیب نامی ایک صارف نے لکھا کہ ‘قانون اور قواعد سب کے لیے برابر ہوں یا پھر کوئی قانون نہ ہو۔ ہم ان خاتون کو جیل کی سلاخوں کے پیچھے دیکھنا چاہتے ہیں۔’
محمد یوسف رئیسانی نے لکھا: ‘یہ بہت اچھی بات ہے کہ یہ خاتون خود کرنل نہیں ہیں۔’
خود کو کرنل کی بیوی کہنے پر سوشل میڈیا پر پاکستان فوج پر بھی تنقید کی جا رہی ہے۔ اسی حوالے سے عمیر صفدر نامی صارف نے لکھا کہ ‘کچھ لوگ صرف ایک خاتون کی وجہ سے پورے ادارے پر تنقید کر رہے ہیں۔ پاکستان فوج وہ ادارہ ہے، جہاں ملک کے کسی بھی ادارے سے زیادہ ڈسپلن پایا جاتا ہے۔’
کچھ لوگوں نے خاتون کو روکنے والے پولیس اہلکار کو بھی سراہا۔
ایک طرف جہاں ٹوئٹر صارفین مذکورہ خاتون کو شدید تنقید کا نشانہ بنا رہے ہیں، وہیں کچھ لوگوں کی حس مزاح بھی جاگ گئی اور انہوں نے اس سنجیدہ معاملے کو بھی میمز کے ذریعے سے بیان کیا۔بی بی سی کے مطابق اس ویڈیو کے پہلے حصے میں یہ خاتون اہلکار سے کہتی ہیں کہ وہ ایک کرنل کی بیوی ہیں اور انھیں سڑک پر نہیں روکا جا سکتا۔ویڈیو کے دوسرے حصے میں مذکورہ خاتون گاڑی سے اتر کر سڑک پر لگی رکاوٹیں ہٹاتی ہیں اور اہلکار کو برا بھلا کہتے ہوئے وہاں سے روانہ ہو جاتی ہیں۔اس سلسلے میں جب بی بی سی نے مقامی پولیس سے رابطہ کرنے کی کوشش کی تو بارہا کوشش کے باوجود جواب موصول نہیں ہوا تاہم نامہ نگار فرحت جاوید کے مطابق عسکری ذرائع کا کہنا ہے کہ یہ واقعہ 20 مئی کو شام پانچ بجے کے قریب صوبہ خیبرپختونخوا میں ہزارہ ایکسپریس وے پر مانسہرہ میں پیش آیا جب یہ خاتون مانسہرہ سے شنکیاری کی جانب سفر کر رہی تھیں۔
عسکری ذرائع نے تصدیق کی ہے کہ مذکورہ خاتون کے شوہر کا تعلق پاکستانی فوج سے ہے، جو لیفٹیننٹ کرنل کے عہدے پر تعینات ہیں۔نامہ نگار کے مطابق عسکری ذرائع کا یہ بھی کہنا ہے کہ مذکورہ افسر کو بھی ستمبر 2018 میں ایک ٹریفک پولیس اہلکار سے بدتمیزی کرنے پر فرنٹیئر فورس رجمنٹ سینٹر سے باہر پوسٹ کر دیا گیا تھا۔
( بشکریہ : بی بی سی اردو )

فیس بک کمینٹ

متعلقہ تحریریں

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker