آنچلڈاکٹر قراۃ العین ہاشمیشاعریلکھاری

نثری نظم : روٹھا جنوری ۔۔ ڈاکٹر قراۃ العین ہاشمی

موسم کی  برفابی عروج پر ھے
میرے کمرے کے آتشدان میں
صنوبر کی چٹختی لکڑی
تیری یادوں کی تپش سے
سارے دروبام سلگا رہی ھے
ریڈیو پر
فیض کی شاعری
میری روح میں
کانٹے اُگا رہی ھے
رگوں کو جما دینے والی
سردی اپنے جوبن پر ھے
ایسے میں ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
بلیک کافی کی کڑواہٹ بھی
تیرے ہجر کی تلخیوں سے
مات کھا رہی ھے
زمین والوں سے۔۔۔۔
سورج ایسے روٹھا ہے
جیسے مجھ سے تم!

فیس بک کمینٹ

متعلقہ تحریریں

Leave a Reply

Your email address will not be published.

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker