اختصارئےحنا عنبرینلکھاری

منتشر خیالات ۔۔ حنا عنبرین

انسان خود سے تھوڑا سا زیادہ پیار کرتا ہے۔ میاں،بیوی بیمار پڑ جائیں تو ایک دوسرے کا جھوٹا نہیں کھاتے۔ ذہن نہ ملیں تو تخلیق کو زنگ لگ جاتا ہے
حیرت ہے اس بارے میں کبھی سوچا نہیں جا سکا
زنگ آلود نسلیں !
مشین اور گھر میں پڑی عورت میں سب قدریں مشترک ہیں
دوشیزہ بچے پیدا کرنے کے بعد پھوہڑ کہلائی جاتی ہے۔
پیچھا چھڑا لینا پیٹھ پر وار کرنے سے بہتر ہوتا ہے۔
آدھا وقت گزر چکا ہے
کیا کوئی وعدہ کیا گیا تھا
انتظار کرنے سے پہلے سوچ تو لینا تھا
ہجرت کرنے والوں نے خود کو برباد کردیا
اے نوجوان تم کیوں بوڑھے ہوگۓ
اگر دو لوگ مل کر رہیں تو گیارہ ہوتے ہیں
تم نےپہلے کیوں نہیں سوچا.
جہالت زرخیز ذہنوں کو
اور نا مناسب آب و ہوا سرسبز درختوں کو، گھاس پھوس اور خودرو جھاڑیوں سے بھر دیتی ہے۔
شہد ،الکوحل ، اور زہر میں سے تمہیں کیا بننا پسند ہے
مجھے یہ جاننا ہوگا !
ہیرو کو اپنا مشن زندگی سے بھی پیارا ہوتا ہے
تم کو وہ پیارا ہے !
لیکن تمہاری یہ سطور بے شمار لوگوں کو پیاری ہوں گی۔
سفر العشق میں کئی پڑاؤ آتے ہیں
زیادہ جبلت کی دلدل میں رہ جاتے ہیں۔ عشق تو بے نیاز کردیتا ہے
یہی تو مقام عطا ہے۔
علم کے دروازے کھول دیے گۓ۔ مطالعہ تجربے کا غلام ہے۔ ہڈ ورتی فن کار کی میراث ہے
سفر کی سمت درست ہو تو تجربہ رائیگاں نہیں جاتا

فیس بک کمینٹ

متعلقہ تحریریں

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker