اہم خبریں

قاسم سلیمانی کے جنازے میں بھگدڑ : 50 افراد جاں بحق ، 200 زخمی ، تدفین مؤخر

تہران: ایران کی قدس فورس کے سربراہ جنرل قاسم سلیمانی کی تدفین کے دوران بھگدڑ مچنے سے 50 افراد جاں بحق اور 200 زخمی ہوگئے جس کے بعد تدفین بھی مؤخر کر دی گئی ہے۔
ایران کی سرکاری خبر ایجنسی کے مطابق قاسم سلیمانی کے آبائی شہر کرمان میں تدفین کے جلوس میں شدید رش کے دوران بھگدڑ مچنے سے ہلاکتوں کی تعداد 50 ہوگئی ہے جب کہ 200 سے زائد زخمی ہوئے ہیں۔مذکورہ حادثے کی وجہ سے قاسم سلیمانی کی آج تدفین کا فیصلہ منسوخ کردیا گیا ہے اور اب نہیں کل سپرد خاک کیا جائے گا۔
برطانوی میڈیا کے مطابق مرنے والوں کی تعداد میں اضافہ ہو سکتا ہے۔یاد رہے کہ جنرل قاسم سلیمانی 3 جنوری کی صبح بغداد ائیرپورٹ کے قریب امریکی ڈرون حملے میں جاں بحق ہوگئے تھے۔
جنرل قاسم سلیمانی کی تدفین کے موقع پر سیاہ لباس میں ملبوس ہزاروں افراد کرمان شہر کی سڑکوں پر نکل آئے اور جنازے میں شریک ہوگئے۔کرمان میں ان کے جنازے کے شرکا سے خطاب کرتے ہوئے ایرانی پاسدارانِ انقلاب کے سربراہ بریگیڈیئر جنرل حسین سلامی نے کہا کہ ایران قاسم سلیمانی کی موت کا بدلہ ’ان مقامات کو جلا کر لے گا جو انھیں (امریکیوں کو) بہت پسند ہیں۔‘
ان کا کہنا تھا کہ ’ہم اپنے دشمن سے کہتے ہیں کہ ہم بدلہ لیں گے۔ اگر انھوں نے اب کوئی قدم اٹھایا تو ہم ان کے پسندیدہ مقامات کو جلا دیں گے اور وہ جانتے ہیں کہ وہ مقامات کہاں ہیں۔‘
قاسم سلیمانی کی ہلاکت کا حکم امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے دیا تھا جبکہ ایران نے کہا ہے کہ وہ اپنے جرنیل کی ہلاکت کا بدلہ لے گا۔ ایران نے اس حملے کے بعد 2015 کے عالمی جوہری معاہدے سے بھی دستبردار ہو کر یورینیئم کی افزودگی کا عمل شروع کر دیا ہے

فیس بک کمینٹ
Tags

متعلقہ تحریریں

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker