اہم خبریں

کورونا کے باعث تیل کی قیمتوں میں کمی ، سٹاک مارکیٹیں کریش کر گئیں

ہانگ کانگ : دنیا بھر میں کورونا وائرس کے پھیلاؤ کے سبب تیل کی قیمتوں میں گراوٹ اور کرنسی کی ہنگامی خرید و فروخت دیکھنے میں آ رہی ہے۔خبر رساں ادارے بلوم برگ کے مطابق پیر کو امریکہ کی سٹاک مارکیٹ میں پانچ فیصد کے قریب گراوٹ دیکھنے میں آئی ہے جبکہ جاپان چھ اور برطانیہ کی سٹاک ایکسچینج سات فیصد سے زیادہ نیچے آئی۔
بلوم برگ کے مطابق تیل کی قیمتوں میں مندی کے رجحان کے جاری رہنے میں خریداروں کو فائدہ ہو رہا ہے لیکن کورونا وائرس کے سبب بیشتر ملکوں میں لاکھوں افراد گھروں میں قید ہو کر رہ گئے ہیں۔ اتوار کو اٹلی نے اپنے دو شہروں وینس اور میلان کو ایک ماہ کے لیے مکمل طور پر بند کرنے کا اعلان کیا۔
ماہرِ معیشت سارہ ہنٹر کا بلوم برگ ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ غیر یقینی کا یہ عالم ہے کہ کسی چیز کی سمت سمجھ نہیں آرہی۔ ان کا کہنا تھا کہ اس وقت قیمتوں کے اتار چڑھاؤ کا درست اندازہ لگانا بہت مشکل ہے۔
واضح رہے کہ عالمی منڈی میں کورونا وائرس کے پھوٹنے کے بعد ہنگامی صورتحال ہے جبکہ سعودی عرب اور روس کے درمیان تیل کی پیداوار اور قیمتوں کے معاملے پر اختلافات ہیں۔
جاپانی ین اور آسٹریلوی ڈالر سمیت کرنسیوں کی ہنگامی خرید و فروخت سے زر مبادلہ کی شرح نے تاجروں کو تذبذب میں ڈال دیا ہے۔
سب سے زیادہ متاثر ہونے والی کرنسیوں میں ناروے کا کرون شامل ہے، جو ڈالر کے مقابلے 80 سے اب تک کی کم ترین سطح پر پہنچ گیا ہے۔
تیل پیدا کرنے والے ممالک کی تنظیم (اوپیک) کا اہم رکن ملک ہونے کے تحت سعودی عرب نے تیل کی پیداوار کم کرنے کا فیصلہ کیا تھا، جس پر روس نے عمل کرنے سے انکار کیا۔
سعودی عرب کا کہنا تھا کہ یہ فیصلہ کورونا وائرس کے سبب کیا گیا، جس کی وجہ سے عالمی معیشت سست روی کا شکار ہوگئی ہے اور تیل کی طلب میں کمی آئی ہے۔
پاکستان اسٹاک ایکسچینج میں نئے ہفتے کا ہی شدید مندی سے ہوا اور 100 انڈکس میں 2375 کی پوائٹس کی کمی ریکارڈ کی گئی۔پاکستان اسٹاک ایکسچینج میں کاروبار کے آغاز پر پہلے چند منٹ کے دوران ہی انڈکس میں 5 اعشاریہ 83 فیصد کم ہوا، مجموعی طور پر انڈکس میں 2106 پوائنٹس کی کمی دیکھنے میں آئی۔
پاکستان اسٹاک ایکسچینج میں شدید مندی کے بعد 100 انڈکس 36112 پوائنٹس پر آیا تو حصص کی خرید و فروخت 45 منٹ کے لیے روک دی گئی۔جب وقفے کے بعد دوبارہ لین دین کا آغاز ہوا تو پھر بھی مندی کا رجحان جاری رہا اور انڈکس 6 فی صد کمی کے بعد 2375 پوائنٹس کم ہو گیا۔
دوپہر بارہ بجے پاکستان میں سٹاک ایکسچینج 100 انڈیکس چھ فیصد گر کر 36 ہزار سے بھی نیچے آ گئی ہے۔کراچی سے اردو نیوز کے نامہ نگار توصیف رضی ملک کے مطابق عالمی منڈی میں خام تیل کی قیمتوں میں نمایاں کمی کا اثر پاکستان سٹاک ایکسچینج پر بھی ہوا اور پیر کی صبح مارکیٹ مندی کا شکار ہوگئی جس کے بعد سٹاک ایکسچینج کو 45 منٹ کے لیے بند کر دیا گیا۔سٹاک مارکیٹ میں صبح کے وقت چار کروڑ شیئرز کے سودے ایک ارب 45 کروڑ میں طے ہوئے۔ کاروبار کے دوران انڈیکس 2291 پوائنٹس گر گیا۔

فیس بک کمینٹ
Tags

متعلقہ تحریریں

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker