اہم خبریں

چین میں دس لاکھ مسلمان ”نازی کیمپوں “ میں قید

اقوام متحدہ : نسل پرستی سے متعلق اقوام متحدہ کی کمیٹی نے حالیہ رپورٹ میں انکشاف کیا ہے کہ چین کے مسلم اکثریتی علاقوں میں ایسے کیمپوں کے واضح شواہد ملے ہیں جن سے ظاہر ہوتا ہے کہ مسلمانوں کو جبری حراست میں رکھ کر مذہب سے متعلق ان کے خیالات کو تبدیل کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے۔ جمعہ کے روز نسل پرستی سے متعلق اقوام متحدہ کی کمیٹی میں پیش کی گٰی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ اسلامی شدت پسندی سے نمٹنے کے لئے چین میں مذہبی فرائض ادا کرنے والے سنکیانگ کے نوجوانوں کو اغوا کر لیا جاتا ہے اور پھر انہیں نازیوں جیسے کیمپوں میں زیر حراست رکھ کر دنیاوی معاملات میں دلچسپی پر اصرار کیا جاتا ہے۔ رپورٹ میں یہ بھی لکھا گیا ہے کہ جب مسلم اکثریتی علاقوں میں داخل ہوں تو ایسا محسوس ہوتا ہے کہ ہم کسی بہت بڑی جیل میں آگئے ہوں۔ جس وقت جنیوا میں یہ رپورٹ پیش کی جا رہی تھی تو چین کا 50 رکنی سفارتی وفد بھی موجود تھا۔ تاہم اس وفد کے ارکان نے کسی قسم کے تبصرہ سے گریز کیا۔بعد ازاں اقوام متحدہ میں چین کے سفیر نے ایک پالیسی بیان میں کہا کہ ” چین کی حکومت ملک میں تمام مذاہب کے پیروکاروں کے لئے یکساں مواقعوں پر یقین رکھتی ہے“ رپورٹ میں واضح الفاظ میں بتایا گیا ہے کہ چین میں مسلمانوں کو ریاست کا دشمن سمجھا جاتا ہے۔

فیس بک کمینٹ

متعلقہ تحریریں

Leave a Reply

Your email address will not be published.

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker