اختصارئےلکھاریمظہر حسین باٹی

رمضان المبارک : مہنگائی نے جلوس نکالنے والوں کا جلوس نکال دیا ۔۔ مظہر حسین باٹی

موجودہ حالات میں ملک سنگین معاشی مسائل سے دوچار ہوچکا ہے،عوام میں یہ تاثر پایا جاتا ہے کہ حکومت کی پالیسیاں ناکام ہوگئی ہیں ہر طرف افراتفری کا سماں ہے، کسی بھی ملک میں اگر کوئی منتخب حکومت اچھے کام کرے اور غریب کے مسائل حل کرے تو وہ عوام میں مقبول بھی ہوگی اور اس حکومت کو عوام صدیوں یاد رکھتی ہے جبکہ اس کے برعکس جو حکومت غریب کو ریلیف نہیں دیتی اور مہنگائی کے بم گراتی ہے تو وہ زیادہ دیر تک عوام پر حکومت نہیں کر سکتی اور بالا آخر غریب عوام سڑکوں پر آجاتی ہے اور حکومت مخالف ریلیاں شروع ہوجاتی ہیں ۔ لیکن اب تو مہنگائی نے جلوس نکالنے والوں کا جلوس نکال دیا ہے ۔
بد قسمتی سے عوام لکیر کی فقیر ہے سیاست دان الیکشن کے دنوں سبز باغ دکھاتے ہیں،مہنگائی کم کریں گے،نوکریاں دیں گے،علاقے میں ترقیاتی کاموں کے جال بچھا دیں گے اور میگا پروجیکٹ لانے جیسے وعدے کرکے عوام سے ووٹ چھین لیتے ہیں اور منتخب ہونے کے بعد ان کے سب وعدے جھوٹ ثابت ہوتے ہیں اور عام آدمی کے لیے کوئی بھی کام نہیں کیا جاتا بلکہ دن بدن مہنگائی بڑھا دی جاتی ہے اور غریب عوام دو وقت کی روٹی کے لیے اپنا سب کچھ بیچ کر اپنا گھریلو گزر بسر کرتا ہے ۔
اسی طرح موجودہ حکومت جس نے الیکشن کے دنوں میں عوامی بھلائی کے لیے بہت سارے وعدے کیے اور عام آدمی کو اپنے پاؤں پرکھڑا کرنے کی بھی حامی بھری اور ملک میں تبدیلی کے نام سے انقلاب لانے کا عہد کیا بلکہ پی ٹی آئی کے چیئرمین نے بے روزگار نوجوانوں کو ایک کروڑ نوکریاں بھی دینے کا وعدہ کیا اور یہ بھی کہا کہ بیرون ممالک سے کسی قسم کا کوئی قرض وغیرہ بھی نہیں لیں گے لیکن جوں جوں ٹائم گزرتا گیا توحکومت اپنے کیے کوئی بھی وعدے پورے نہ کرسکی یہ سارے وعدے محض نعروں تک ہی محدود رہ گئے،اشیاء خوردونوش کی قیمتی آسمانوں کو چھونے لگیں،مہنگائی نے غریب عوام کی کمر توڑ کررکھ دی دو وقت کی روٹی ایک مزدور شخص کے لیے بہت مشکل ہوگئی غریب افراد خود سوزی کرنے لگے ایک کروڑ نوکریاں دینے کا بھی وعدہ وفا نہ ہوسکا اس خود سوختہ مہنگائی میں دوکانداروں نے من مانے ریٹ مقرر کرلیے ماہ رمضان کا تقدس بھی پامال کرہے ہیں کچھ دکاندار، حکومت کی طرف سے دوکانداروں کوریٹ لسٹ اپنی دوکان میں آویزاں رکھنے اور حکومت کے مقررہ ریٹوں پر اشیاء فروخت کرنے کی سختی کی گئی اور متعدد دوکانداروں کو بھاری جرمانے کی کیے گئے لیکن مہنگائی کو کنٹرول کرنے کا کوئی بھی حکومتی طریقہ کامیاب نہ ہوسکا بلکہ مہنگائی پہلے سے بھی بڑھ رہی ہے،بجلی و گیس کی لوڈ شیڈنگ معمول بن چکی ہے ۔انتظامیہ منشیات فروشوں سے بھتہ لے کر خاموش ہے،فوڈ سنٹر پر کسانوں کے حقوق پر بیوپاری ڈاکہ ڈال رہے ہیں کسانوں کی نام نہاد تنظیمیں بھی کسانوں کے نام پر حکومت سے کروڑوں روپے بٹور کر کسان کو بیچ دیتی ہیں،بے روزگاری عام ہے گریجوایٹ طلباء رہڑیاں لگائے کھڑے ہیں قصہ مختصر کہ اس ملک میں غریب پس رہا ہے اس کا کوئی پرسان حال نہیں،اگر عام آدمی کے ساتھ کوئی ظلم کرے تو اسکو کوئی انصاف نہیں ملتا بلکہ جس کی لاٹھی اس کی بھینس والی بات ہے ہمارے ملک میں لاقانونیت عام ہے موجودہ حکومت پر عوام کو بہت سی امیدیں تھیں کہ یہ خالص عام آدمی کی جماعت ہے لیکن اس حکومت سے ہر آدمی کو مایوسی ہوئی،اس ملک میں کرپشن تو تقریبا ساری جماعتوں نے کی ہے لیکن ایک ایسی جماعت ہے جس نے صرف غریب کی بات کی و ہ تھی پاکستان پیپلز پارٹی،ذوالفقار بھٹو اور بے نظیر بھٹو کے بعد اس پارٹی کے قائدین نے کرپشن کی انتہا کردی،روٹی،مکان،کپڑا کا نعرہ لگاکر کوئی عوام ریلیف نہ دیا اس ملک میں میرے خیال میں غریب دن بدن غریب ہورہا ہے اور امیر دن بدن امیر ہوتا جارہا ہے امیروں کے بچے بیرون ممالک کے اعلی سکولوں میں تعلیم حاصل کررہے ہیں جبکہ غریب کے بچے کے پاس سکول میں فیس ادا کرنے کے پیسے نہیں ہوتے اگر کوئی ایک مرتبہ اسمبلی میں چلا جائے تو اس کی پوری نسل سنور جاتی ہے کیونکہ منتخب نمائندوں کے ہرترقیاتی کاموں میں کمیشن طے ہوتے ہیں، حالانکہ ہمارا ملک پاکستان دنیا کا حسین ترین ملک ہے اس میں جنت نظیر وادیا ں ہیں جن کو دیکھنے کے لیے بیرون ممالک سے عوام آتی ہے،کوئلے کے ذخائر ہیں،نمک کی کان ہے،سوئی گیس وافر مقدار میں ہے اور سب سے بڑی بات ہمارے ملک پاکستان میں بہت ٹیلنٹ ہے جوکہ کم ہی ملکوں میں ہے۔

فیس بک کمینٹ

متعلقہ تحریریں

مزید پڑھیں

Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker