ادبرضوانہ تبسم درانیشاعریلکھاری

2017ء کی پہلی نظم ۔۔ رضوانہ تبسم درانی

چلو  اک کام کرتے
نئے اس سال میں جاناں
رُ و پہلی پیار کی صبح
ترے آنگن میں آ اُ ترے
خوشی کے قمقمے سارے
مقدر کے سبھی تارے
تمہارے نام کرتے ہیں
نئے اِ س سال میں جاناں
وفا،چاہت،محبت کی
سبھی روشن حسیں کرنیں
اُ جالے سارے موسم کے
دھنک رنگوں کی مالا بھی
اُ فق پر چاند کی ٹھنڈک
تمھارے نام کرتے ہیں
نئے اس سال میں جاناں
وہ ماضی کے سبھی قِصے
وہ سارے سرد سے لہجے
بُھلا کر سارے رنج و غم
اُ میدوں کی نئی کونپل
تمھارے نام کرتے ہیں
سندیسے میری چاہت کے
مرے جیون کا ہر اک رنگ
مری صبحیں مری شامیں
مری آنکھوں کے سب جگنو
تمہارے نام کرتے ہیں
نئے اس سال میں جاناں
پُرانا کچھ تو بدلے گا
نئی رنگینیاں ہوں گی
نیا سورج بھی نکلے گا
اُمنگیں جو نئی ہوں گی
تمہارے نام کرتے ہیں
نئے اس سال میں جاناں
تبسم نے جو اک تحفہ
تمہارے نام بھیجا ہے
وہ اک ہے سانس کی ڈوری
اور اک معصوم سادہ دل
یہ اپنا آپ بھی جاناں
تمہارے نام کرتے ہیں
نئے اس سال میں جاناں
چلو اک کام کرتے ہیں

فیس بک کمینٹ

متعلقہ تحریریں

Leave a Reply

Your email address will not be published.

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker