اختصارئےانیلہ اشرفلکھاری

بے روزگار صحافیوں کو پرسہ کون دے گا؟ ۔۔ انیلہ اشرف

جنگ ملتان سے بھی دوسرے میڈیا گروپس کی طرز پر ملتان اسٹیشن ختم کرنے کی طرف قدم بڑھانے کی اطلاعات ہیں ۔ آئندہ چند روز میں ملتان کے صحافیوں پر ایک اور قیامت صغریٰ برپا ہو گی۔صحافیوں کا معاشی قتل عام جاری و ساری ہے بیروزگار  اور بھوک و افلاس سے میرے ساتھی مر رہے مگر نہ تو قتل ہونے والے بول رہے نہ ان کے حقوق کے نام پر نعرے لگانے والے۔
یہ کیسی بے حسی،خوف اور موت ہے کہ ہمیں پرسہ دینے والا بھی کوئی نہیں ہے ہمارے نام نہاد صحافتی تنظیموں کے مقامی نمائندے صرف اپنی نوکریاں محفوظ کرکے ایک طرف بیٹھے ہمارا تماشہ دیکھ رہے متواتر۔مالکان معاشی قتل کے ساتھ ہمارے بچوں اور جنوبی پنجاب کے کروڑوں لوگوں کے مستقبل سے کھیل رہےان کی آواز بند کی جارہی ہے اور حکومت ہماری موت پہ پر سکون سو رہی۔میڈیا کے جن صحافیوں کو اس سارے دوراہے پہ لایا گیا مالکان اور حکومت کسی نے بھی نہیں سوچا کہ یہ تو چھوٹے ورکر ہیں ان سینکڑوں لوگوں کو بیروزگار کیا بڑی جرآت سے مگرمچھوں پر ہاتھ ڈال کے دیکھو ذرا۔۔۔۔۔صرف اتنی درخواست ہے کہ خدارا میرے ساتھیو بولو ایسے ہی جیسے دوسرے کے حق کیلئے بولتے رہے ہو۔کوئی نہیں کھڑا ہوگا تمہارے لئے تم سب لٹے پٹے ہی ایک دوسرے کے سہارے کھڑے ہو جاؤ۔

فیس بک کمینٹ
Tags

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker