اختصارئےغلام یاسین بزنجولکھاری

غلام یاسین بزنجو کا اختصاریہ : پنجاب ضمنی الیکشن، پی ٹی آئی کے لیے راستہ ہموار ؟

جس وقت پاکستان میں معاشی بحرانی کیفیت اپنے عروج پر تھی عین اس وقت آل پاکستان ڈیمو کریٹک مومنٹ میں شامل جماعتیں پاکستان تحریک انصاف کی حکومت کے خاتمے کے لیے زور لگا رہی تھیں ۔
جب کوئی تحریک یا اتحاد صرف ملک میں اقتدار حاصل کرنے کے لیے بنایا جائے اس تحریک اور اتحاد کے پاس اپنے مقاصد کے علاوہ ملک اور قوم کے لیے کچھ نہ ہو تو یقينا ایسے اتحاد اور تحریکوں کے لیے عام پاکستانی کے پاس بھی کچھ نہیں ہوگا اور عام آدمی کا فیصلہ بھی ایسی تحاریک کے خلاف آئے گا ۔17 جولائی کے دن پنجاب میں ضمنی الیکشن کا رزلٹ اس رات کا جواب ہے جس رات کو عدالتوں کا خصوصی تعاون حاصل کرکے راتوں رات ملک میں ایک جمہوری وزیر اعظم کو اس لیے فارغ کیا گیا کہ آپ ٹھیک طریقے سے ملک چلانے میں کامیاب نہیں ہیں اور گھر چلے جائیں۔ عمران خان اور ان کے کابينہ پر شدید دباؤ تھا، جس کے باعث انہوں نے کابينہ سمیت اقتدار چھوڑ دیا۔
عام پاکستانی کو سبز باغ دکھایا گیا کہ آل پاکستان ڈیمو کریٹک مومنٹ کی حمایت یافتہ حکومت میں دودھ اور شہد کی نہریں بہادی جائیں گی ۔
مگر دوسری جانب حقیقی صورتحال یہ ہے کہ عمران خان کی حکومت چلے جانے کے بعد موجودہ حکومت نے جب سے اقتدار سنبھالا ہے اس دن سے ملک میں بد ترین مہنگائی اور شدید معاشی بحران کا سامنا ہے۔ ملک میں پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں بے تحاشہ اضافہ ہوا ہے۔ ڈالر روپے کے مقابلے میں اوپر کی جانب سفر کررہا ہے۔ پھر بھی موجودہ حکومت کے لوگ پوچھ رہے ہیں کہ پنجاب میں ضمنی الیکشن کے نتائج کیوں ایسے آئے کہ 20 نشستوں میں پندرہ پر پی ٹی آئی جیت گئی۔
اب ضمنی الیکشن کے بعد ملک میں عام انتخابات کے لیے راہ صاف دکھائی دے رہی ہے۔ پی ٹی آئی اپنی کھوئی ہوئی حکومت لانے کے لیے کمربستہ ہے موجودہ حکومت کی بد ترین مہنگائی اور دیگر معاشی معاملات کے بعد اب مجھے نہیں لگتا کہ پنجاب میں مسلم لیگ سابقہ ادوار کی طرح نشستيں حاصل کرنے میں کامیاب ہوگی۔ مسلم لیگ کو اس بند گلی میں لانے میں سابق صدر آصف علی زرداری نے یہ چال چلائی ہے۔ زرداری نے اب پینترا بدلہ ہے وہ سمجھتا ہے کہ اگلے نہیں تو اس سے اگلے انتخابات میں بلاول بھٹو زرداری ضرور وزیر اعظم بنیں گے۔ موجودہ شہباز حکومت میں زرداری نے اپنے بیٹے کو ٹریننگ کے طورپر وزیر خارجہ بنایا تاکہ مستقبل میں وہ ایک عالمی سطح کے شناسا وزیر اعظم ہوں ۔ اور نواز شریف کو بھی پتہ ہے کہ ان کے ساتھ کس نے کیوں یہ گیم کھیلا ہے۔

فیس بک کمینٹ
Tags

متعلقہ تحریریں

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker