اہم خبریںسرائیکی وسیب

آرٹیکل 62 ، 63 اور زرتاج گل کے خلاف نااہلی کا ریفرنس

اسلام آباد : پاکستان کی سیاست میں آئین کی دو شقوں 62 اور 63 کی قانونی حیثیت اور سیاسی مقاصد کے لیے ان کا استعمال ایک عرصے سے زیرِ بحث رہا ہے۔پاکستان کی بڑی سیاسی جماعتوں سمیت ناقدین آئین کی ان متنازع شقوں کو ماضی میں پارلیمان کے منتخب نمائندوں کو سیاسی مقاصد کے حصول کی خاطر نااہل قرار دیے جانے کے الزامات عائد کرتے رہے ہیں۔ماضی قریب میں حزبِ اختلاف کی جماعت پاکستان مسلم لیگ نواز ایسے الزامات دہراتی ہوئی نظر آئی ہے۔تاہم حال ہی میں اسی جماعت کی ممبر پنجاب اسمبلی حنا پرویز بٹ نے حکمراں جماعت کی وفاقی وزیر زرتاج گل کی نااہلی کے لیے درخواست قومی اسمبلی میں جمع کروائی ہے۔



قومی اسمبلی کے سپیکر اسد قیصر کے نام خط میں حنا پرویز بٹ نے موقف اختیار کیا ہے کہ ’زرتاج گل بطور وزیر لیے گئے اپنے حلف کی خلاف ورزی کی مرتکب ٹھہری ہیں۔’اس خط کے ساتھ منسلک ریفرنس میں زرتاج گل کی نااہلی کا سوال اٹھاتے ہوئے آرٹیکل 62 ہی کا سہارا لیا گیا ہے۔سپیکر قومی اسمبلی سے ریفرنس الیکشن کمیشن کو بھجوانے کی استدعا کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ ’زرتاج گل نے اپنے اختیارات کا ناجائز استعمال کرتے ہوئے سرکاری حکام پر اثر و رسوخ کے ذریعے اپنی بہن شبنم گل کو انسدادِ دہشت گردی کے قومی ادارے نیکٹا میں ڈائریکٹر لگوایا۔‘’ان کا یہ اقدام ان کے عہدے کی خلاف ورزی ہے جو انھوں نے بطورِ وزیرِ مملکت برائے موسمیاتی تبدیلی اٹھایا تھا۔‘اس کے ساتھ استدعا کی گئی ہے کہ ان کی پارلیمان کے ممبر کے طور پر نااہلیت کا تعین کرنے کے لیے اس ریفرنس کو الیکشن کمیشن بھجوایا جائے۔یاد رہے کہ رواں برس جنوری میں وزیرِ مملکت برائے موسمیاتی تبدیلی زرتاج گل کی بہن شبنم گل کی بطور ڈائریکٹر نیکٹا میں تعیناتی کی خبریں سامنے آئی تھیں۔
( بشکریہ : بی بی سی اردو ) dwqcc

فیس بک کمینٹ
Tags

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker