اہم خبریں

نواز شریف کو چار ہفتوں کے لیے بیرون ملک جانے کی غیر مشروط اجازت

لاہور: ہائی کورٹ نے مسلم لیگ ن کے قائد اور سابق وزیر اعظم نواز شریف کے بیرون ملک جانے کی غیر مشروط اجازت دے دی اور ان کا نام ای سی ایل سےنکا لنے کا حکم دیا ہے . جسٹس علی باقر نجفی اور جسٹس سردار احمد نعیم پر مشتمل دو رکنی بینچ نے مسلم لیگ ن کے صدر شہباز شریف کی جانب سے اپنے بھائی کا نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ (ای سی ایل) سے نکالنے اور بیرون ملک غیر مشروط روانگی سے متعلق درخواست کی سماعت کی .عدالت نے نواز شریف کو بیرون ملک علاج کے لیے چار ہفتے کا وقت دیا ہے۔ اگر نواز شریف کی صحت بہتر نہیں ہوتی تو اس مدت میں مزید توسیع ہو سکتی ہے۔ حکومتی نمائندہ سفارتخانے کے ذریعے نواز شریف سے رابطہ کر سکے گا۔اس سے قبل لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس علی باقر نجفی اور جسٹس سردار احمد نعیم پر مشتمل دو رکنی بینچ نے شہباز شریف سے تحریری یقین دہانی کا مسودہ طلب کیا تھا۔ اب سے کچھ دیر قبل شہباز شریف کی جانب سے عدالت میں تحریری یقین دہانی کا مسودہ پیش کیا گیا کہ نواز شریف علاج کے بعد وطن واپس آئیں گے تاہم حکومتی وکیل نے اس پر اعتراضات اٹھاتے ہوئے اسے مسترد کر دیا۔ اس کے بعد عدالت نے فیصلہ کیا کہ وہ اس حوالے سے مسودہ خود تیار کر کے فریقین کے وکلا کو دیں گے۔اس موقع پر عدالت نے استفسار کیا کہ نواز شریف کی صحت سے متعلق ہفتہ وار رپورٹ مل سکے گی جس پر اشتراوصاف نے جواب دیا کہ برطانیہ میں ہفتہ وار رپورٹ دینے کا کوئی رواج نہیں ہے۔ شہباز شریف کے وکلا کا کہنا تھا کہ نواز شریف کی واپسی کا کوئی ٹائم فریم نہیں دیا جا سکتا کیونکہ ان کی صحت ایک ہفتے میں بھی ٹھیک ہو سکتی ہے اور زیادہ وقت بھی لگ سکتا ہے۔
( بشکریہ : بی بی سی اردو )

فیس بک کمینٹ
Tags

متعلقہ تحریریں

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker