اہم خبریں

پاکستان میں‌ کورونا متاثرین کی تعداد 94 ہو گئی : مزارات بند : ملازمین حاضری سے مستثنیٰ

کراچی: سندھ میں کورونا وائرس کے کیسز کی تعداد 76 ہوگئی جس کے بعد ملک بھر میں مجموعی تعداد 94 ہوگئی۔سندھ حکومت کے ترجمان نے بتایا کہ تفتان سے سکھر آنے والے اب تک 50 افراد میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوچکی ہے جب کہ 25 کیسز کراچی اور ایک کا تعلق حیدرآباد سے ہے۔
مرتضیٰ وہاب نے بتایا کہ سندھ میں کورونا وائرس کے مجموعی کیسز کی تعداد 76 ہوگئی ہے اور 2 مریضوں کو صحت یابی کے بعد ڈسچارج کردیا گیا ہے جب کہ 74 افراد کو آئسولیشن میں رکھا گیا ہے۔
جیونیوز سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے سندھ حکومت کے ترجمان کا کہنا تھا کہ عوام سے احتیاط کی پرزور درخواست ہے، شہری غیر ضروری طور پر گھروں سے باہر نہ نکلیں، آپ کی حکومت کورونا وائرس کی وبا پر قابو پانے کی بھرپور کوشش کررہی ہے، ہمیں خوف زدہ ہونے کی ضرورت نہیں ہے۔انہوں نےکہا کہ کورونا وائرس کا ابھی تک کوئی علاج سامنے نہیں آیا، یہ ایک صوبے یا ایک شہر کا مسئلہ نہیں ہے بلکہ سب کو مل کر کام کرنا چاہیے، ہم بار بار تفتان بارڈر پر اقدامات کا کہہ رہے تھے۔
صوبائی وزیر تعلیم نے میٹرک اور انٹر کے امتحانات کی نئی تاریخوں کا اعلان کردیا۔سعید غنی نے بتایا کہ یکم جون سے 15 جون تک نویں دسویں کے علاوہ تمام کلاسوں کے امتحانات ہوں گے اور 15 جون کے بعد نئی کلاسیں شروع ہوں گی جب کہ 15 جون سے نویں اور دسویں کے امتحانات ہوں گے، یہ امتحانات 15 دن تک چلیں گے، امتحانات کے بعد 15 اگست 2020 کو دسویں جماعت کا نتیجہ جاری کیا جائے گا جس کے لیے بورڈ سے درخواست کی ہے۔
وزیر تعلیم نے کہا کہ 6 جولائی سے انٹر کے امتحانات ہوں گے، میٹرک اور انٹر کے امتحانات دوپہر کی شفٹ میں ہوں گے، بارہویں جماعت کے نتائج 15 ستمبر کو جاری ہوں گے، کالج میں گیارہویں اور بارہویں جماعت کا تعلیمی سال یکم اگست 2020 سے شروع ہوگا۔
کورونا وائرس کے پیش نظر حفاظتی اقدامات کے طورپر ملتان میں بعض نجی دفاتر میں ملازمین کو حاضری سے مستثنیٰ قراردےدیاگیا ہے اور انہیں کہا گیا ہے کہ وہ گھروں میں بیٹھ کر کام کریں اور دفتر کے ساتھ مسلسل رابطے میں رہیں۔عالمی ادارہ صحت کی ہدایات کے مطابق کورونا وائرس سے بچاﺅ کے لیے لوگوں کو ان کے گھروں تک محدود کرنا بنیادی احتیاطی تدابیر میں شامل ہے۔
مختلف دفاتر نے صرف ضروری سٹاف کو حاضری کا پابند کیا ہے اور اس کے لیے بھی ضروری قراردیا ہے کہ وہ ماسک لگا کر دفتر آئیں اور دفتر میں داخلے کے بعد جراثیم کش ادویہ سے اپنے ہاتھ صاف کریں۔ذرائع کے مطابق پنجاب کے سرکاری دفاتر میں بھی لوگوں کی آمدورفت محدود کرنے کی تجاویز زیرغور ہیں۔ ضلع کچہری میں پہلے ہی چیف جسٹس کی ہدایات کے مطابق صرف ان وکلاءکو کچہری میں آنے کا کہا گیا ہے جن کے کیس کسی عدالت میں زیرسماعت ہیں۔ اسی طرح سائل بھی صرف وہی آئے گا جسے عدالت نے طلب کیا ہے۔سول ایوی ایشن کی ہدایات کے مطابق ایئرپورٹ پر بھی مسافروں کو لینے یا چھوڑنے کے لیے صرف ایک شخص کوجانے کی اجازت ہوگی۔
مقامی کھادکمپنی کے ایریا منیجر نوازش علی خان نے بتایا کہ کراچی میں ہمارا سٹاف گھروں میں بیٹھ کر کام کررہاہے جبکہ ملتان آفس میں بھی ہم نے مکمل احتیاطی تدابیر کی ہیں ۔ ہمارے گوداموں پر آمدورفت محدود کردی گئی ہے جبکہ لیبر کوبھی ماسک پہننے اور جراثیم کش ادویہ سے باربار ہاتھ دھونے کی ہدایت کی گئی ہے۔
پنجاب میں کورونا وائرس کا پہلا کیس سامنے آنے کے بعد حفاظتی انتظامات کے پیش نظر صوبے بھر میں مزارات کو بند کرنے کا فیصلہ کرلیا گیا۔پنجاب میں گزشتہ روز کورونا وائرس کا کیس سامنے آیا جہاں 4 روز قبل دبئی سے لاہور آنے والے ایک مسافر نے شبہ ہونے پر ٹیسٹ کرایا اور نجی لیبارٹری نے مریض میں کورونا وائرس کی تصدیق کی۔
پنجاب کی انتظامیہ نے وزیراعلیٰ عثمان بزدار کی ہدایت پر صوبے بھر میں مزارات کو بند کرانے کا فیصلہ کرلیا اور اس سلسلے میں چیف سیکریٹری کو فیصلے پر فوری عملدرآمد کی ہدات دی گئی ہے۔

فیس بک کمینٹ
Tags

متعلقہ تحریریں

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker