عمران عثمانیکھیللکھاری

کرکٹرز کی قید ہوکر بھی پریکٹس،ٹشو پیپر کی گیند،ایکسرسائز میں اہلیہ مددگار۔۔عمران عثمانی

کرکٹرز گھروں میں قید تو ہوگئے لیکن اپنی عادت و پیشہ وارانہ پریکٹس سے کیسے دور رہ سکتے ہیں. دنیائے کرکٹ کے نامی گرامی پلیئرز اپنے اپنے گھروں میں روزانہ کی بنیاد پر پریکٹس و ورزش میں مصروف ہیں. کرکٹرز بچوں اور نوجوانوں کے لئے آئیڈیل بھی ہوتے ہیں اور رول ماڈل بھی. دیکھئیے اپنے رول ماڈل کو کہ گراؤنڈز کی بندش ،کھیل کی معطلی کے بعد گھر کی 4 دیواری میں بھی وہ اپنی معمول کی پریکٹس جاری رکھے ہوئے ہیں۔
اس لیئے کوئی جہاں بھی ہے اور جیسے بھی۔اپنی معمول کی پریکٹس ورش اور احتیاط جاری رکھے.دیکھئے اگر مطلوبہ سامان نہیں بھی تو بھی عزم کرکے مرضی کی چیز بنائی جاسکتی ہے .اب انگلش وکٹ کیپر جو س بٹلر کو ملاحظہ فرمائیں کہ کٹ،پیڈ حتی کہ ہیلمٹ پہنے زمین پر لیٹے ایکسرسائز کر رہے ہیں اور انکی اہلیہ اس میں انہیں مدد فراہم کر رہی ہے. سابق سٹار این بیل کے گھر میں شاید گیند نہیں تھی انھوں نے ٹشو رول کو گیند بناکر پریکٹس کی اور خوب کی .

فیس بک کمینٹ

متعلقہ تحریریں

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker