اہم خبریں

نامورمصنفہ،”بانو“ کی ایڈیٹر اور ٹی وی پروڈیوسر سعدیہ دہلوی انتقال کرگئیں

دہلی:نامور مصنفہ، صحافی ،سماجی کارکن اور ”شمع“ دہلی کے بانی ایڈیٹر حافظ یوسف دہلوی کی پوتی سعدیہ دہلوی طویل علالت کے بعد 5اگست کو دہلی میں انتقال کرگئیں۔ ان کی عمر 63سال تھی اور وہ طویل عرصہ سے کینسر کے خلاف نبردآزما تھیں۔ ہندوستانی میڈیا کے مطابق وہ دہلی کے ایک ہسپتال میں زیرعلاج رہنے کے بعد گھر منتقل ہوچکی تھیں۔سعدیہ دہلوی کاتعلق ” شمع“ خاندان سے تھا۔ یہ خاندان حضرت نظام الدین اولیاءاور خواجہ معین الدین چشتی اجمیری کے پیروکاروں میں شامل ہے۔حافظ یوسف دہلوی نے 1938ءمیں دہلی سے ایک فلمی و ادبی ماہانہ رسالے”شمع“ کا اجراءکیاجس نے دیکھتے ہی دیکھتے پورے برصغیر میں دھوم مچادی۔
سعدیہ دہلوی کھانے پکانے میں بھی مہارت رکھتی تھیں۔ دہلی کے کھانوں پران کی کتاب”Jasmine & Jinns: Memories & recipes of my Delhi“ کے نام سے شائع ہوئی۔ سعدیہ دہلوی بہت سی تخلیقی صلاحیتو ں کی مالک تھیں۔ انہوں نےمتعدد دستاویزی فلمیں تیار کیں اور کئی ڈاکومنٹریز کے سکرپٹ بھی تحریر کیے۔وہ ٹی وی پروگرام ” Amma & Family“ کی بھی پروڈیوسر رہیں۔ 1995ءمیں اس پروگرام میں زہرا سہگل بھی حصہ لیتی تھیں۔ وہ نامور مصنف خشونت سنگھ کے قریبی دوستوں میں شامل تھیں۔ خشونت سنگھ نے اپنی ایک کتاب بھی سعدیہ دہلوی کے نام کی ۔سعدیہ اس ٹی وی پروگرام کی پروڈیوسرتھیں جس میں خشونت سنگھ مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والی خواتین کے انٹرویو کرتے تھے۔سعدیہ دہلوی خواتین کے رسالے ”بانو“ کی ایڈیٹربھی تھیں۔ اس رسالے میں صرف خواتین کی تحریریں شائع کی جاتی تھیں۔

فیس بک کمینٹ
Tags

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker