آنچلحنا عنبرینشاعریلکھاری

غزل : مجھ کو خود پر غرور ہوتا ہے ۔۔ حنا عنبرین

غزل : مجھ کو خود پر غرور ہوتا ہے ۔۔ حنا عنبرین

جس کا دل غم سے چور ہوتا ہے
اسکے چہرے پہ نور ہوتا ہے

اس نے ملنا ضرور ہوتا یے
کب مرے دل سے دور ہوتا ہے

جب تمہارے قریب ہوتی ہوں
مجھ کو خود پر غرور ہوتا ہے

عشق آنکھوں میں اک سحر کا سماں
دھڑکنوں کا سرور ہوتا ہے

شاعری اور شعور کے مابین
کچھ نہ کچھ لاشعور ہوتا ہے

عشق اک بےکراں سمندر ہے
کب کسی سے عبور ہوتا ہے

کھول دیتا ہے بابِ سرِ نہاں
عشق کشف الصدور ہوتا ہے

اُچ …تو ہے اپنے …اُچ.. کی مستی میں
بلھے شاہ کا ..قصور.. ہوتا ہے

جن کے خوشے جھکے ہوئے ہوں حنا
ان درختوں پہ بور ہوتا ہے

*** حنا عنبرین

فیس بک کمینٹ

متعلقہ تحریریں

1 thought on “غزل : مجھ کو خود پر غرور ہوتا ہے ۔۔ حنا عنبرین”

Leave a Reply

Your email address will not be published.

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker