اہم خبریں

نیوزی لینڈ میں پہلی بار سرکاری سطح پر اذان : شہدا کی یاد میں دو منٹ کی خاموشی

کرائسٹ چرچ : نیوزی لینڈ کے شہر کرائسٹ چرچ میں 15 مارچ کو دو مساجد میں حملوں میں ہلاک ہونے والوں کی یاد میں نیوزی لینڈ میں پہلی بار سرکاری سطح پر اذان نشر کی گئی جس کے بعد دو منٹ کی خاموشی اختیار کی گئی اور منعقدہ تقاریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم آرڈرن نے اظہار یکجہتی کا پیغام دیا۔نیوزی لینڈ کی وزیر اعظم جاسنڈا آرڈرن نے بھی ہزاروں سوگواران کے ساتھ النور مسجد کے قریب منعقدہ تقریب میں شرکت کی اور ملک میں مقیم مسلم برادری سے خطاب کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ ‘نیوزی لینڈ آپ کے ساتھ سوگوار ہے، ہم ایک ہیں۔’نیوزی لینڈ میں ہزاروں افراد گزشتہ جمعے کو دہشت گردی کے واقعہ میں ہلاک ہونے والوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کا قومی دن منانے کے لیے النور مسجد کی قریب ہیگلے پارک میں جمع ہوئے۔مسلمان برادری کے ساتھ اظہار یکجہتی کے قومی دن کی مناسبت سے جمعہ کی اذان کو سرکاری ٹیلی ویژن اور ریڈیو پر مقامی وقت کے مطابق ڈیڑھ بجے نشر کیا گیا جس کے بعد دو منٹ کی خاموشی اختیار کی گئی۔اس سے قبل نیوزی لینڈ کی وزیر اعظم جاسنڈا آرڈرن نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ‘پیغمبر اسلام کے مطابق تمام مسلمان ایک جسم کی مانند ہیں۔ اگر جسم کے ایک حصہ میں تکلیف ہو تو پورا جسم اس کی تکلیف محسوس کرتا ہے۔’امام مسجد جمال فودہ کا جمعہ کے خطبہ میں کہنا تھا کہ ‘حملہ آور نے گزشتہ ہفتے دنیا بھر میں لاکھوں افراد کے دل دکھائے ہیں لیکن آج میں اسی جگہ سے محبت اور ہمدردی دیکھ رہا ہوں۔ ہمارے دل ٹوٹے ہوئے ہیں لیکن ہم نہیں ٹوٹے۔ ہم زندہ ہیں، ہم متحد ہیں اور کسی کو اپنے اندر پھوٹ ڈالنے کی اجازت نہیں دیں گے۔’

فیس بک کمینٹ
Tags

متعلقہ تحریریں

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker