اہم خبریں

برطانوی وزیراعظم بورس جانسن بھی کورونا کا شکار : قرنطینہ ہو گئے

لندن : برطانوی وزیراعظم بورس جانسن میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوئی ہے لیکن انہوں نے کہا ہے کہ وہ کورونا وائرس کے خلاف کی جانے والی حکومتی کوششوں کو جاری رکھیں گے۔
اپنے ٹوئٹر پیغام میں برطانوی وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ’گذشتہ چوبیس گھنٹوں میں میرے اندر معمولی علامات ظاہر ہوئیں اور میرا کورونا وائرس ٹیسٹ مثبت آیا ہے۔‘ بورس جانسن نے یہ بھی لکھا ہے کہ ’میں اب خود کو قرنطینہ کر رہا ہوں، لیکن میں ویڈیو کانفرنس کے ذریعے کورونا کے خلاف کی جاری حکومتی کوششیں کو لیڈ کرتا رہوں گا۔‘
واضح رہے کہ برطانیہ نے پیر کے روز ملک میں تین ہفتوں کے لیے دکانیں اور دو سے زائد افراد کے مجمعے پر پابندی لگاتے ہوئے کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے سخت اقدامات کا اعلان کیا تھا۔
پیر کی شام کو ٹی وی پر خطاب کرتے ہوئے برطانوی وزیراعظم بورس جانسن نے کہا تھا کہ تمام ‘غیر ضروری دکانیں، بند رہیں گی۔’ انہوں نے ملک میں کورونا وائرس کو لڑنے کے اقدامات کا بتاتے ہوئے عوام کو گھروں پر رہنے کی ہدایت کی تھی۔
برطانوی خبر رساں ادارے روئٹرز کے مطابق بورس جانسن کے ساتھ وزیراعظم ہاؤس کے سینئیر وزیروں سٹاف کے دیگر ممبران کا بھی میل ملاپ رہا ہے اور شاید اب انہیں بھی قرنطینہ میں رہنا پڑے گا۔
وزیراعظم ہاؤس کے ترجمان پروفیسر کرِس وہیٹی کا کہنا ہے کہ ’وزیراعظم کا ٹیسٹ برطانیہ کے چیف میڈیکل آفیسر کے مشورے پر کروایا گیا تھا جو 10 ڈاؤننگ سٹریٹ میں ہوا اور مثبت آیا۔‘
اس سے قبل بدھ کو برطانیہ کے شہزادہ چارلس میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوئی تھی۔ شاہی خاندان کی جانب سے جاری کردہ بیان میں شہزادہ چارلس کے کورونا وائرس سے متاثر ہونے کی تصدیق کی گئی تھی۔
بیان میں مزید کہا گیا تھا کہ 71 سالہ شہزادہ چارلس میں کورونا کی ہلکی علامات ظاہر ہوئی ہیں تاہم وہ اچھی صحت میں ہیں۔برطانیہ میں کورونا وائرس کے باعث 578 افراد ہلاک ہو چکے ہیں، جبکہ 11 ہزار 658 متاثر ہوئے ہیں۔
( بشکریہ : اردو نیوز )

فیس بک کمینٹ
Tags

متعلقہ تحریریں

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker