اہم خبریں

کورونا سے مرنے والے اراکین اسمبلی کی تعداد چھ ہو گئی

اسلام آباد : کورونا وائرس کے نتیجے میں بدھ کے روز دو اراکین صوبائی اسمبلی انتقال کر گئے اس طرح وائرس سے ہلاک ہونے والے اراکین اسمبلی کی تعداد چھ ہو گئی
ہلاک ہونے والے مسلم لیگ (ن) کے رکن صوبائی اسمبلی شوکت منظور چیمہ گزشتہ کئی روز سے وینٹی لیٹر پر تھے۔ ملک بھر میں ایک ہی روز میں چار ہزار ایک سو اکتیس کیس ریکارڈ، مریضوں کی تعداد 80 ہزار چار سو تریسٹھ تک پہنچ گئی۔
ڈاکٹرز کے مطابق مرحوم ایم پی اے شوکت منظور چیمہ دل کے شدید عارضے میں بھی مبتلا تھے۔ کورونا وائرس کے باعث ان کی طبعیت بگڑ چکی تھی جس کے بعد انھیں گزشتہ سات روز سے وینٹی لیٹر پر منتقل کر دیا گیا تھا۔واضح رہے کہ شوکت منظور چیمہ پی پی 51 وزیر آباد سے مسلم لیگ (ن) کی ٹکٹ پر مسلسل تیسری مرتبہ رکن پنجاب اسمبلی منتخب ہوئے تھے۔ یاد رہے کہ اس سے قبل مسلم لیگ (ن) کے رہنما نہال ہاشمی، انجینئر امیر مقام اور عطا تارڑ بھی کورونا وائرس کا شکار ہو چکے ہیں۔
ادھر وزیر کھیل بلوچستان عبدالخالق ہزارہ بھی کورونا وائرس کا شکار ہو چکے ہیں۔ انھیں سانس میں دشواری کے باعث کراچی کے ہسپتال منتقل کیا گیا ہے۔ بلوچستان کابینہ میں عبدالخالق ہزارہ تیسرے وزیر ہیں جو کورونا سے متاثر ہوئے۔ صوبائی وزیر خزانہ ظہور بلیدی اور وزیر ریونیو سلیم کھوسہ بھی اس سے قبل کورونا سے متاثر ہو چکے ہیں۔
ادھر پاکستان تحریک انصاف کے رکن صوبائی اسمبلی میاں جمشید الدین کاکا خیل بھی کورونا وائرس کے باعث انتقال کر گئے۔ڈپٹی کمشنر نوشہرہ کا کہنا ہے کہ خیبر پختونخوا کے رکن اسمبلی میاں جمشید الدین ایک ہفتے سے اسلام آباد کے اسپتال میں زیر علاج تھے اور تین روز سے وینٹی لیٹر پر تھے۔
میاں جمشیدالدین کاکا خیل 2018 کے انتخابات میں خیبرپختونخوا کے حلقے پی کے 63 سے کامیاب ہوئے تھے اور وہ صوبائی وزیر برائے ایکسائز بھی رہ چکے ہیں۔
یاد رہے کہ گزشتہ روز جمعیت علمائے اسلام (ف) سے تعلق رکھنے والے رکن قومی اسمبلی منیر اورکزئی انتقال کر گئے تھے جب کہ لاہور سے تعلق رکھنے والے جے یو آئی ف کے رہنما امتیاز قمر کا بھی گزشتہ روز کورونا وائرس کے باعث انتقال ہوا ہے۔

فیس بک کمینٹ

متعلقہ تحریریں

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker