ادبشاعریلکھاری

میں خانہ خداکوبھرا چاہتاہوں : مناجا ت / حبیب الرحمٰن بٹالوی

میں خانہ خداکوبھرا چاہتاہوں : مناجا ت / حبیب الرحمٰن بٹالوی

میں اپنے خدا کی عطاءچاہتاہوں
رسول خدا کی ثناءچاہتا ہوں

مقدس، معطر ، پیمبر ہیں میرے
میں توصیف ان کی سوا چاہتاہوں

میں عاصی، خطا کار،مجرم ہوں لیکن
معافی، تلافی ،بھلا چاہتاہوں

”کرونا“ سے دنیا کی بس ہو چکی ہے
میں نائب ہوں تیرا، شفاچاہتاہوں

ترستا ہے سجدے کوخانہ خدا بھی
میں خانہ خداکوبھرا چاہتاہوں

فقط بے سہاروں کا تُوآسرا ہے
سوہردم ترا آسرا چاہتاہوں

سوائے خدا کے میں کس کو پکاروں!
کوئی ہے اگر توپتا چاہتاہوں

تری مرضی مولا ہراک مسئلے میں
رضا میں تری ہی رضا چاہتا ہوں

اس اجڑے چمن کا توہی پاسباں ہے
کلی ،پھول،پودا ہراچاہتا ہوں

یہ دنیا کہ بے کس ہے،لاچارو ماندہ
میں اس کے مرض کی دوا چاہتاہوں

یہ رحم وکرم،اور جودوسخا میں
وراءالوراءالوراءچاہتا ہوں

حبیب آپ کاہوں میں عاجز سا بندہ
میں دونوں جہاں میں بھلا چاہتا ہوں

فیس بک کمینٹ
Tags

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker