اہم خبریں

پاکستان کو گرے لسٹ سے نہیں نکالیں گے : فیٹف کا اعلان

نیو یارک : منی لانڈرنگ اور دہشت گردوں کی مالی امداد کی روک تھام کے عالمی ادارے فنانشل ایکشن ٹاسک فورس نے پاکستان کو بدستور زیرِ نگرانی یعنی ‘گرے لسٹ’ میں رکھنے کا فیصلہ کیا ہے۔اس بات کا فیصلہ ادارے کے تین روزہ اجلاس میں کیا گیا جو جمعے کو اختتام پذیر ہوا۔ کورونا کی وبا کی وجہ سے یہ اجلاس آن لائن منعقد کیا گیا تھا۔
اجلاس کے دوران پاکستان کے حکام کی طرف سے دہشت گردی میں ملوث گروہوں کے خلاف اب تک کی جانے والی کارروائی اور انھیں معاشی مدد فراہم کرنے والے اداروں اور افراد کے خلاف کی جانے والی کارروائی کا جائزہ لیا گیا۔
21 سے 23 اکتوبر 2020 تک ہونے والے اجلاس میں ایف اے ٹی ایف کی طرف سے منی لانڈرنگ کا جائزہ لینے والے ایشیا پیسیفک گروپ کی رپورٹ کا بھی جائزہ لیا گیا۔
اس رپورٹ میں جہاں اس بات کی تصدیق کی گئی کہ پاکستان ایف اے ٹی ایف کی 27 سفارشات پوری کرنے میں مصروفِ عمل ہے اور ٹیرر فننانسنگ کی روک تھام کے لیے 15 معاملات پر قانون سازی بھی کر چکا ہے وہیں یہ بھی کہا گیا ہے کہ چند سفارشات پر عملدرآمد نہیں کیا گیا، جس سے یہ تاثر ملا کہ ادارہ پاکستان کی جانب سے اس ضمن میں کیے جانے والے اقدامات سے زیادہ مطمئن نہیں۔فیصلے سے قبل پاکستان کے وزیرِ خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا تھا کہ ایف اے ٹی ایف کو پاکستان کے اقدامات کو مدِنظر رکھتے ہوئے اس کے لیے گنجائش نکالنی چاہیے۔
ایف اے ٹی ایف کے فیصلے کے برعکس شاہ محمود قریشی نے دعویٰ کیا تھا کہ ‘ایف اے ٹی ایف نے پاکستان کو 27 اقدامات کرنے کا کہا تھا جس میں سے 21 پر سو فیصد عملدرآمد ہوا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ جو بقیہ چھ اقدامات رہ گئے ہیں حکومت ان پر بھی کام کر رہی ہے۔
( بشکریہ : بی بی سی اردو )

فیس بک کمینٹ
Tags

متعلقہ تحریریں

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker